Sunday , November 19 2017
Home / ہندوستان / دبھولکر اور پنسارے کے قاتلوں کو پکڑنے میں حکومت ناکام

دبھولکر اور پنسارے کے قاتلوں کو پکڑنے میں حکومت ناکام

مہاراشٹرا کے اپوزیشن لیڈر رادھا کرشنا کا الزام
شری ڈی ( مہاراشٹرا ) ۔ 24 ۔ اگست : (سیاست ڈاٹ کام ) : مہاراشٹرا اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر مسٹر رادھا کرشنا وکی پاٹل نے یہ الزام عائد کیا ہے کہ معقولیت پسند نریندر دبھولکر اور سی پی آئی لیڈر گویند پنسار کے قاتلوں کو پکڑنے میں ریاستی حکومت ناکام ہوگئی ہے ۔ سینئیر کانگریس لیڈر نے کل یہاں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے توہمات کیخلاف مہم چلانے والے دبھولکر کا قتل اگرچیکہ کانگریس کے دور حکومت میں ہوا تھا اور اس وقت اسمبلی کے اندر اور باہر زبردست تنقیدیں کی گئیں لیکن بی جے پی اقتدار میں آنے کے بعد گویند پنسارے کا قتل کیا گیا اور طویل عرصہ گذرنے کے بعد بھی حملہ آوروں کو پکڑا نہیں گیا ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ایک طرف حکومت دبھولکر اور پنسارے کے قاتلوں کو پکڑنے میں دلچسپی نہیں دکھا رہی ہے تو دوسری طرف مالیگاؤں بم دھماکوں (2008 ) کے ملزمین پرگیہ سنگھ ٹھاکر اور لیفٹننٹ سری کانت پروہت اور دیگر کے ساتھ نرمی برتنے کے لیے سرکاری وکیل پر دباؤ ڈال رہی ہے۔ واضح رہے کہ مخالف توہم پرستی کے جہد کار نریندر دبھولکر کو پونے میں 20 اگست 2013 کے دن گولی مار دی گی تھی جب کہ سی پی آئی لیڈر اور چنگی مخالف تحریک کے علمبردار گویند پنسارے کو جاریہ سال 16 فروری کو کولہا پور میں گولی مار دی گئی تھی ۔ دریں اثناء وکی پاٹل نے آج ناسک میں جاریہ کمبھ میلہ کے سلسلہ میں سرکاری عہدیداروں اور شری سائی بابا سنتھان ٹرسٹ کے نمائندوں سے ملاقات کی اور سائی بابا مندر کو ہزارہا معتقدین کی آمد کے پیش نظر انتظامات کا جائزہ لیا ۔

TOPPOPULARRECENT