Thursday , September 20 2018
Home / شہر کی خبریں / دختران اسلام کو پردے کے احکام کو عام کرنے کا مشورہ

دختران اسلام کو پردے کے احکام کو عام کرنے کا مشورہ

اسلامی برقعے اور لباس کو فروغ دینے کی ضرورت، قمر تفہیم کا خطاب

اسلامی برقعے اور لباس کو فروغ دینے کی ضرورت، قمر تفہیم کا خطاب
حیدرآباد۔14۔ جون (پریس نوٹ)مسلم خواتین کو چاہئیے کہ وہ پردہ کے نام پر دانستہ طور پر اٹھائے جارہے سوالات اور مشکلات کا فخریہ انداز میں جواب دیتے ہوئے پردے کے احکامات کو عام کرنے میں مزید سرگرم رول ادا کریں اور صحابیات ؓ کو اپنا رول ماڈل بنائیں۔40 روزہ ڈپلومہ ان اسلامک اسٹڈیز کے اختتام کے موقع پر ’’پردے کی اہمیت اور خواتین کی غفلت‘‘ کے عنوان پر منعقدہ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے قمر تفہیم نے ان خیالات کا اظہار کیا۔ یونیورسل اسلامک ریسرچ سنٹر(یو آئی آر سی ) کی خواتین تنظیم کی جانب سے ایس اے ایمپیریل گارڈن فنکشن میں اس پروگرام کا اہتمام کیا گیا تھا۔اس موقع پر طالبات میں انعامات بھی تقسیم کیے گئے۔ قمر تفہیم نے ‘مہدی پٹنم برانچ کی صدر نے کہا کہ عورت کیلئے پردے کا شرعی حکم اسلامی شریعت کا طرہ امتیاز ہے۔ اس لیے دختران اسلام کو پردہ کے سلسلے میں معذرت خواہانہ انداز اختیارکرنے کی بجائے فخریہ انداز میں اس حکم کو عام کرنا چاہئیے ۔ مرد اور عورت سے متعلق پردے کے احکامات پر تفصیلی روشنی ڈالتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عورت کیلئے جس قدر حجاب اختیار کیا جائے اسی قدر اللہ کے ہاں اس کی عزت و تعظیم ہوگی اور شرف و بزرگی میں اضافہ ہوگا۔قمر تفہیم نے مزید کہا کہ اسلام نے نہ صرف عورت کو غیرمحرم مرد سے نزاکت اور نرم گفتگو والے انداز سے دور رہنے کا ہی حکم نہیں دیا بلکہ ہر ایسے راستے پر دیوار کھڑی کردی ہے جہاں اسے جذبات کے بھڑکنے اور شہوات نفسانی کو تسکین پہنچانے کا سامان بہم پہنچ سکتا ہے۔ آج کے برقعہ اور لباس پر بات کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے برقعے اور کپڑے ایسے ہونا چاہئیے جس سے کہ جسم کی بناوٹ کا اندازہ لگانا ناممکن ہو۔ پیارے نبی حضرت محمد ﷺ ‘ صحابہ اور صحابیات ؓ نے اللہ کے قوانین کو نافذکرنے کیلئے جو قربانیاں دی ہیں‘ اس سے واقفیت بیحد ضروری ہے۔

TOPPOPULARRECENT