Friday , December 15 2017
Home / Top Stories / دروغ گوئی میں نقوی بھی مودی کے نقش قدم پر گامزن

دروغ گوئی میں نقوی بھی مودی کے نقش قدم پر گامزن

Mukhtar Abbas Naqvi

اترپردیش میں انتخابات کے پیش نظر حج کوٹہ میں اضافہ کا جھوٹا دعوی

نئی دہلی۔ 13جنوری (سیاست ڈاٹ کام) اب جبکہ سعودی عرب نے ہندوستان کا 20 فیصد حج کوٹہ بحال کردیا ہے جو کہ گزشتہ 3 سال کے دوران حرمین شریفین میں توسیع کاموں کے باعث محدود کردیا گیا تھا، اس اقدام کی وجہ سے موجودہ حج کوٹہ 1,35,903 سے 1,70,400 تک پہنچ جائے گا۔ مملکتی وزیر اقلیتی امور (آزادانہ چارج) اور مملکتی وزیر پارلیمانی امور مختار عباس نقوی نے آج بتایا ہے کہ سعودی عرب نے ہندوستان کے سالانہ حج کوٹہ میں 34,500 کا مزید اضافہ کردیا ہے اور یہ فیصلہ جدہ میں آج ہندوستان اور سعودی عرب کے وزیر حج و عمرہ ڈاکٹر محمد صالح بن طاہر نبق کے درمیان حج معاہدہ پر دستخط کے موقع پر کیا گیا۔ وزارت اقلیتی بہبود کے جاری کردہ ایک صحافتی بیان کے مطابق مختار عباس نقوی نے کہا کہ یہ انتہائی مسرت کی بات ہے کہ سعودی عرب نے ہندوستان کے حج کوٹہ میں 34,500 کا اضافہ کردیا ہے اور یہ 1988 ء کے بعد ہندوستانی حج کوٹہ میں سب سے بڑا اضافہ ہے۔ تاہم وزیر موصوف نے یہ دعوی کس بنیاد پر کیا ہے ناقابل فہم ہے۔ مکہ اور مدینہ منورہ میں توسیع کاموں سے قبل سال 2013ء میں ہندوستانی حج کوٹہ تقریباً 1,75,000 تھا اس وقت متحدہ ترقی پسند اتحاد (یو پی اے) برسر اقتدار تھا مرکزی وزیر کا یہ دعوی اترپردیش میں مجوزہ اسمبلی کے پس منظر میں دیکھا جارہا ہے جبکہ بی جے پی مسلمانوں کو رجھانے کے لیے جھوٹے وعدے اور دعوے کررہی ہے۔ مختار عباس نقوی کے ادعا پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے حج کمیٹی آف انڈیا سے وابستہ ایک سابق عہدیدار نے بتایا کہ اگر وزیر موصوف کوئی کارنامہ سر انجام دینا چاہتے ہیں تو سعودی حکام کو یہ قائل کروائیں کہ 2011 ء کی مردم شماری کی بنیاد پر انڈین حج کوٹہ متعین کیا جائے۔

اس کے برخلاف مرکزی وزیر دروغ گوئی سے کام لیتے ہوئے خود فریبی میں مبتلا ہورہے ہیں کہ 1988 ء کے بعد سے حج کوٹہ میں زبردست اضافہ کیا گیا ہے۔ جدہ میں آج حج 2017 ء معاہدہ پر دستخط کے بعد نقوی نے سعودی وزیر کے ساتھ اپنی ملاقات کو ثمر آور قرار دیا اور بتایا کہ حج امور سے متعلق تمام مسائل پر تعمیری بات چیت کی گئی ہے جس میں ہندوستانی عازمین حج کے لیے ٹرانسپورٹ قیام و طعام کے انتظامات اور سلامتی کار احاطہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان اور سعودی عرب، عالمی امن، ترقی اور خوشحالی کے ساجھیدار ہیں اور باہمی تعلقات میں عازمین حج ایک مضبوط ستون کے مانند ہیں۔ واضح رہے کہ گزشتہ سال حج کمیٹی آف انڈیا کے توسط سے ملک گیر سطح پر 21 مقامات (طیرانگاہوں) سے 99,903 عازمین حج سعودی عرب اور مابقی 36000 عازمین نے خانگی ٹور آپریٹرس کی خدمات حاصل کی تھیں اور 2017ء حج کیلئے 2 جنوری سے درخواستوں کی وصولی کا عمل شروع کردیا گیا ہے اور آخری تاریخ 24 جنوری مقرر ہے۔

TOPPOPULARRECENT