Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / درگاہوں کے انتظامی الاٹمنٹ کا معاملہ ہائی کورٹ پہنچ گیا

درگاہوں کے انتظامی الاٹمنٹ کا معاملہ ہائی کورٹ پہنچ گیا

آکشن کے بجائے نامنیشن کے فیصلے کو چیالنج
وقف بورڈ کو جواب دینے دو ہفتوں کی مہلت
حیدرآباد۔26 اکٹوبر (سیاست نیوز) وقف بورڈ کی جانب سے دو درگاہوں کے انتظامات آکشن کے بجائے نامنیشن کی بنیاد پر الاٹ کرنے کا معاملہ ہائی کورٹ پہنچ چکا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ درگاہ جان پاک شہید اور اروا پلی کی درگاہ کے انتظامات نامنیشن کی بنیاد پر حوالے کرنے کے فیصلے کو چیالنج کرتے ہوئے مقامی افراد نے ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی اور حکم التوا کی اپیل کی۔ عدالت نے درخواستوں کی سماعت کے بعد وقف بورڈ کو جواب داخل کرنے کے لیے دو ہفتے کی مہلت دی اور مقدمہ کی آئندہ سماعت دو ہفتے بعد ہوگی۔ واضح رہے کہ وقف بورڈ نے حال ہی میں درگاہ جان پاک شہید کے انتظامات 20 لاکھ روپئے میں نامنیشن کی بنیاد پر حوالے کردیئے اس کے علاوہ ارواپلی کے انتظامات 2 لاکھ 25 ہزار روپئے میں کنٹراکٹر کے حوالے کیے گئے۔ ان فیصلوں پر مختلف گوشوں سے اعتراضات کیے گئے اور آخرکار ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے درگاہ حضرت جہانگیر پیراں کے ساتھ ان دو درگاہوں کے انتظامات کی حوالگی کی جانچ کی ہدایت دی۔ سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل ان معاملات کی جانچ کریں گے۔ لیکن ابھی تک بورڈ کی جانب سے انہیں تفصیلات فراہم نہیں کی گئی ہیں۔ اوپن آکشن کے بجائے لیز پر انتظامات دیئے جانے سے وقف بورڈ کو لاکھوں روپیوں کے نقصان کا اندیشہ ہے۔ جان پاک شہید کے انتظامات گزشتہ مرتبہ تقریباً 80 لاکھ روپئے دیئے گئے تھے لیکن اس مرتبہ نامنیشن کی بنیاد پر صرف 20 لاکھ روپئے کا کنٹراکٹ منظور کیا گیا۔ وقف بورڈ کی جانب سے ان فیصلوں کو درست قرار دینے کی کوشش کی جارہی ہے۔

 

TOPPOPULARRECENT