Tuesday , November 21 2017
Home / ہندوستان / درگاہ حاجی علیؒ کے اندرونی حصہ میں خواتین کو رسائی کی اجازت

درگاہ حاجی علیؒ کے اندرونی حصہ میں خواتین کو رسائی کی اجازت

سپریم کورٹ میں درگاہ ٹرسٹ کا حلفنامہ ، انتظامات کیلئے چار ہفتوں کا وقت
نئی دہلی ۔ 24 اکتوبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) ممبئی کی تاریخی درگاہ حاجی علی اب خواتین کو بھی مردوں کی طرح اندرون حصہ تک رسائی کی اجازت حاصل رہے گی ۔ درگاہ کے ٹرسٹ نے سپریم کورٹ میں آج یہ اعلان کیا ۔ سپریم کورٹ نے اس مسئلہ پر بمبئی ہائیکورٹ کے احکام پر عمل کیلئے درگاہ کے احاطہ میں درکار تمام ضروری تبدیلیوں اور انتظامات کیلئے ٹرسٹ کو چار ہفتوں کا وقت دیا تھا ۔ ٹرسٹ کے وکیل نے عدالت عظٔمیٰ کے چیف جسٹس ٹی ایس ٹھاکر کی قیادت میں تشکیل شدہ بنچ سے کہاکہ ’’حاجی علی درگاہ ٹرسٹ مردوں اور خواتین کے درمیان مساوات پر فی الواقعی یقین رکھتا ہے ‘‘ ۔ اس بنچ نے جس میں جسٹس ڈی وائی چندر چوڑ اور جسٹس ایل ناگیشور راؤ بھی شامل ہیں، بمبئی ہائیکورٹ کے احکام پر اس کے روح و منشا کے مطابق تعمیل کی ہدایت دیتے ہوئے درگاہ ٹرسٹ کی درخواست کی یکسوئی کردی اور کہا کہ ’’تاوقتیکہ آپ ہائی کورٹ احکام کے مطابق خواتین کو رسائی کی اجازت دیتے ہیں۔ ہمیں کوئی مسئلہ نہیں رہے گا‘‘ ۔ درگاہ ٹرسٹ کی پیروی کرتے ہوئے سینئر ایڈوکیٹ گوپال سبرامنیم نے کہا کہ اس ضمن میں ضمنی حلفنامہ بھی داخل کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ٹرسٹ بھی خواتین وک درگاہ کے اندرونی حصہ میں رسائی کی اجازت دینے کیلئے تیارہے جس پر بنچ نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ان احکام پر تعمیل کیلئے مزید چار ہفتوں کا وقت دیا جاتا ہے ۔ مختلف وکلاء اور سماجی کارکنوں نے ٹرسٹ کے موقف کی ستائش کی اور اسے خواتین کے حقوق کیلئے تحریک کو ایک نیا حوصلہ اور دستور کی فتح قرار دیا۔ تروپتی دیسائی کی تنظیم گھومتا رنگ راگنی بریگیڈ نے صنفی عدم مساوات کے خلاف یہ مہم شروع کی تھی ۔ مختلف مذہبی مقامات بشمول درگاہ حضرت حاجی علیؒ میں بھی یہ مہم جاری رکھی گئی ۔ دیسائی نے کہاکہ سپریم کورٹ اور خاتون تنظیموں کے دباؤ کی بناء یہ کامیابی ملی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT