Monday , October 22 2018
Home / شہر کی خبریں / درگاہ حضرت فقیر ملاؒ کرمن گھاٹ کی اراضی تحفظ کے لیے حصار بندی کا فیصلہ

درگاہ حضرت فقیر ملاؒ کرمن گھاٹ کی اراضی تحفظ کے لیے حصار بندی کا فیصلہ

سکریٹری اقلیتی بہبود دانا کشور کا دورہ ، قبرستان ، امپاورمنٹ سنٹر قائم کرنے کی تجویز
حیدرآباد۔21۔ فروری (سیاست نیوز) سکریٹری اقلیتی بہبود دانا کشور نے درگاہ حضرت فقیر ملاؒ کرمن گھاٹ کی 32 ایکر 20 گنٹے اراضی کے تحفظ کیلئے حصار بندی کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے آج مقامی عوامی نمائندوں اور عہدیداروں کے ساتھ اراضی کا معائنہ کیا اوراس قیمتی اراضی کی حصار بندی کیلئے 37 لاکھ روپئے کی منظوری دی ہے۔ اس کے علاوہ تین ایکر اراضی پر اقلیتوں کیلئے امپاورمنٹ سنٹر قائم کیا جائے گا۔ اس سنٹر کی تعمیر پر 43 لاکھ روپئے خرچ کئے جائیں گے۔ امپاورمنٹ سنٹر میں اقلیتی نوجوانوں کو مختلف کورسس کی تربیت فراہم کی جائے گی۔ اس سلسلہ میں محکمہ اقلیتی بہبود بہت جلد تفصیلات کو قطعیت دے گا۔ اراضی پر ماڈل مسلم قبرستان کی تجویز ہے۔ اس کے علاوہ مسجد اور غسل خانہ تعمیر کیا جائے گا ۔ حیدرآباد میں ہندوؤں اور عیسائیوں کیلئے حکومت نے ماڈل شمشان گھاٹ اور قبرستان کے لئے اراضی منظور کی ہے ، اسی طرز پر درگاہ حضرت فقیر ملاؒ کی 32 ایکر 20 گنٹے اراضی وقف بورڈ کے حوالے کی گئی ۔ بتایا جاتا ہے کہ درگاہ کے تحت 200 ایکرس سے زائد اراضی موجود ہے۔ تاہم اس پر سرکاری اور غیر سرکاری افراد اور اداروں کے غیر مجاز قبضے ہیں۔ 32 ایکر اراضی ریونیو حکام کے کنٹرول میں تھی اور معاملہ عدالت میں زیر دوران ہے ۔ چیف منسٹر نے مسلم ماڈل قبرستان کیلئے یہ اراضی وقف بورڈ کے حوالے کردی۔ سکریٹری اقلیتی بہبود دانا کشور نے بتایا کہ حصار بندی کا کام جلد شروع کیا جائے گا تاکہ غیر مجاز قابضین سے قیمتی اراضی کو بچایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ امپاورمنٹ سنٹر کی تفصیلات چیف منسٹر کے سی آر کے پاس اجلاس میں طئے کی جائیں گی۔

TOPPOPULARRECENT