Sunday , November 19 2017
Home / ہندوستان / دستور ہند کی دفعہ 35Aپر اسمبلی کا خصوصی اجلاس اہم

دستور ہند کی دفعہ 35Aپر اسمبلی کا خصوصی اجلاس اہم

اپوزیشن کا بیان‘ کشمیر میں دہشت گردی پر فوج غالب : جیٹلی ‘ مچھیل یاترا کے سخت حفاظتی انتظامات ‘نوجوان کی زخمی نعش دستیاب
سرینگر ۔ 20اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) سی پی آئی ایم قائد رکن پارلیمنٹ تری گامی اور آزاد رکن اسمبلی حکیم یسین نے آج جموں و کشمیر اسمبلی کا ایک خصوصی اجلاس طلب کرنے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ اس میں دستور ہند کی دفعہ 35A حذف کرنے کی کوشش پر غور کیا جانا چاہیئے ۔ تری گامی اور یسین نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا کہ ریاستی اسمبلی کا دستور ہند دفعہ 35Aپر غور کرنے کیلئے خصوصی اجلاس بلاتاخیر طلب کرنا ضروری ہے ‘ تاکہ سپریم کورٹ میں ریاستی حکومت کی جانب سے پُرزور استدلال پیش کیا جاسکے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ دفعہ 35A کو حذف کرنے کی تجویز ایک فرقہ پرست ‘ انتشار پسند اور غیر جمہوری طاقتوں کا ایجنڈہ ہے ۔ ممبئی سے موصولہ اطلاع کے بموجب وزیر دفاع ارون جیٹلی نے کہا کہ فوج نے ریاست جموں و کشمیر میں دہشت گردوں پر غالب آنے کا تہیہ کیا ہے ۔ مرکز اپنے اس موقف پر اٹل ہے کہ عسکریت پسندی کا ریاست جموں و کشمیر میں خاتمہ ہونا چاہیئے ۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر پیچیدہ ہوگیا ہے کیونکہ دہشت گردوں کی سرحد پار سے تائید کی جارہی ہے ۔ علاوہ ازیں کیونکہ مقامی گروپس بھی اس میں ملوث ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سنگباری کی شکل میں شہریوں کا احتجاج دیکھا گیا ۔ بعض اوقات اسے دہشت گردوں کو فرار ہونے کا موقع دینے کیلئے بھی استعمال کیا گیا ۔ وہ ممبئی صدر بی جے پی اشیش شیلر کے زیراہتمام ایک تقریب سے خطاب کررہے تھے ۔

چیف منسٹر مہاراشٹرا دیویندر فرڈنویز بھی اس موقع پر موجود تھے ۔ وزیر دفاع نے سابق کانگریس زیر قیادت یو پی اے حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اس کی برسوں قدیم مسئلہ کشمیر کی یکسوئی کیلئے کوئی ٹھوس پالیسی نہیں تھی ۔ بھدرواہ سے موصولہ اطلاع کے بموجب سنٹرل ریزرو پولیس فورس نے آج کہا کہ بلند مقام پر کیلاش اور مچھیل یاترا کیلئے سخت حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں ۔ کل مچھیل یاترا کا آغاز جموں و کشمیر کی ڈوڈا پہاڑیوں سے ہوا ۔ کمانڈنگ آفیسر کے پدما کمار نے کہا کہ سی آر پی ایف کی 33بٹالین حفاظتی انتظامات کیلئے تعینات کی گئی ہے ۔تمام انتظامات مکمل ہوچکے ہیں۔دریںاثناء شوپیان سے موصولہ اطلاع کے بموجب جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان سے اتوار کے روز ایک 16 سالہ نوجوان کی گولیوں سے چھلنی نعشبرآمد ہوئی ہے ۔۔سرینگر سے موصولہ اطلاع کے بموجب جموں وکشمیر کے دار الحکومت سرینگر میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے دفتر پر حملے کی اطلاعات کی تردید کرتے ہوئے پولس نے کہا ہے دھماکے کی وجوہات کی تحقیقات کی جا رہی ہے ۔ پولس ترجمان نے آج بتایا کہ سوشل میڈیا پر اس طرح کی افواہیں پھیلائی جا رہی ہیں کہ کل رات راج باغ میں بی جے پی کے دفتر پر حملہ کیا گیا اور اس میں لوٹ پاٹ کی گئی لیکن ایسا کچھ نہیں ہوا ہے اور ایسا کوئي واقعہ نہیں ہو ا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ایک زور دار دھماکے کی آواز سنی گئی تھی اور اس کی تفتیش کی جا رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT