Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / دسہرہ کے بعد اقلیتی قائدین کو کارپوریشن و بورڈس میں نمائندگی

دسہرہ کے بعد اقلیتی قائدین کو کارپوریشن و بورڈس میں نمائندگی

قائدین و کارکنوں کی فہرست طلب، چیف منسٹر کے سی آر کی ڈپٹی چیف منسٹر سے مشاورت
حیدرآباد۔/10اکٹوبر، ( سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے طویل عرصہ سے سرکاری عہدوں پر نامزدگی کے خواہاں اقلیتی قائدین اور کارکنوں کو دسہرہ کے بعد مختلف کارپوریشنوں اور بورڈز میں نامزد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ چیف منسٹر نے اس مسئلہ پر ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی سے مشاورت کی اور انہیں ریاست کے 10اضلاع میں پارٹی کے سرگرم قائدین اور کارکنوں کی فہرست پیش کرنے کا مشورہ دیا تاکہ پارٹی کیلئے سرگرم خدمات انجام دینے والوں کو مناسب مقام دیا جاسکے۔ ذرائع نے بتایا کہ چیف منسٹر نے دیگر وزراء سے بھی کہا کہ وہ اپنے اضلاع میں پارٹی کیلئے متحرک قائدین اور کارکنوں کے نام پیش کریں۔ چیف منسٹر اپنے طور پر بھی ایسے قائدین اور کارکنوں کی فہرست تیار کررہے ہیں جنہیں وہ سرکاری عہدوں پر نامزد کرنا چاہتے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ دسہرہ سے قبل مندر کمیٹیوں اور مارکٹ کمیٹیوں میں تقررات کا عمل مکمل کرلیا جائے گا جبکہ دسہرہ کے بعد کارپوریشنوں اور بورڈز کی تشکیل عمل میں آئے گی۔ مارکٹ کمیٹیوں کے تقررات میں بھی اقلیتوں کو مناسب نمائندگی دینے کی تجویز ہے۔ ہر ضلع میں کم از کم ایک مارکٹ کمیٹی کے صدر نشین کے عہدہ پر اقلیتی طبقہ سے تعلق رکھنے والے قائد کا انتخاب کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ اقلیتی اداروں میں اردو اکیڈیمی، حج کمیٹی، اقلیتی فینانس کارپوریشن، وقف بورڈ اور اقلیتی کمیشن شامل ہیں۔ وقف بورڈ کی تقسیم ابھی باقی ہے لہذا بورڈکی تشکیل کیلئے وقت درکار ہوگا جبکہ پہلے مرحلہ میں اردو اکیڈیمی، حج کمیٹی اور فینانس کارپوریشن پر تقررات کا امکان ہے۔ صدرنشین اور بورڈ آف ڈائرکٹرس میں شمولیت کیلئے اقلیتی قائدین چیف منسٹر اور ڈپٹی چیف منسٹر سے مسلسل نمائندگی کررہے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ دیگر وزراء نے بھی چیف منسٹر کو بعض قائدین کے ناموں کی سفارش کی ہے۔ چیف منسٹر کے علاوہ ان کی دختر کویتا، فرزند کے ٹی آر اور بھانجے ہریش راؤ کے پاس عہدے کے خواہشمندوں کا ہجوم دیکھا جارہا ہے۔ اسی دوران چیف منسٹر کے قریبی ذرائع نے بتایا کہ تلنگانہ کے حصول کیلئے 14برسوں تک جاری رہی جدوجہد میں اہم رول ادا کرنے والے قائدین کو اولین ترجیح دی جائے گی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT