Sunday , April 22 2018
Home / شہر کی خبریں / دس خاتون ملازمین کے دفاتر میں انٹرنل کامپلینٹ کمیٹی کا قیام ضروری

دس خاتون ملازمین کے دفاتر میں انٹرنل کامپلینٹ کمیٹی کا قیام ضروری

مرکزی حکومت کے قواعد کی خلاف ورزی پر ڈاکٹرس پر 50 ہزار کا جرمانہ
حیدرآباد 13 نومبر (سیاست نیوز) کیا دفاتر میں ساتھی ملازمین یا اعلیٰ عہدیداران خواتین ملازمین کے ساتھ جنسی زیادتی یا ہراسانی کررہے ہیں؟ کیا خواتین سوچ رہی ہیں کہ اعلیٰ عہدیدار ہی جنسی ہراساں کررہے ہیں تو آخر کس کو شکایت کریں؟ شکایت کرنے پر نتائج سے متعلق خوف میں مبتلا ہیں؟ تو مرکزی حکومت کا کہنا ہے کہ خاتون ملازمین اس طرح کے خوف میں مبتلا ہونے کی چنداں ضرورت نہیں ہے بلکہ وہ آفس میں بیٹھ کر ہی راست طور پر آن لائن شکایت درج کرسکتی ہیں اور شکایت کرنے کیلئے مرکزی حکومت نے ’’شی باکس‘‘ (یعنی سیکسول ہراسمنٹ کمپلائنٹ الیکٹرانک باکس) کو متعارف کیا ہے۔ کسی بھی دفتر میں ساتھی ملازمین اعلیٰ آفیسرس کی جانب سے جنسی ہراسانی یا زیادتی کرنے پر خواتین www.shebox.nic.in ویب سائٹ شکایت درج کرسکتی ہیں۔ ویب سائٹ پر شکایت کس طرح کریں؟ آپ کی شکایت موصول ہونے کے بعد انٹرنل کمپلائنٹس کمیٹی کے ذمہ داران کی جانب سے متعلقہ ادارے تک پہونچائی جائے گی۔ دفتر میں جنسی ہراسانی مخالف قانون 2013 کے مطابق ملزمین کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ اس قانون کے مطابق ہر ایک دفتر یا ادارہ جہاں کم از کم 10 خاتون ملازمین ہوں وہاں ایک انٹرنل کمپلائنٹ کمیٹی کا قیام ضروری ہے۔ اگر کسی ادارے یا دفتر میں یہ کمیٹی نہ ہونے کی صورت میں حکومت کی جانب سے ادارے کے ڈائرکٹرس کے خلاف 50 ہزار روپئے جرمانہ عائد کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT