دفتر ڈی ای او حیدرآباد میں بنیادی سہولتوں کا فقدان ، ملازمین کا احتجاج

حیدرآباد ۔ 11 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : حیدرآباد ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسر کا دفتر شہر حیدرآباد کے اسکولوں میں بہتر تعلیم کے علاوہ بنیادی سہولتوں کی فراہمی و اساتذہ کی ضروریات کا نگران ادارہ ہے لیکن جب اس دفتر کے ملازمین ہی بنیادی سہولتوں کی عدم موجودگی کی شکایت کرتے ہوئے خدمات کا بائیکاٹ کردیں اور یہ کہیں کہ ڈی ای او کے دفتر میں ہی بنیاد

حیدرآباد ۔ 11 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : حیدرآباد ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسر کا دفتر شہر حیدرآباد کے اسکولوں میں بہتر تعلیم کے علاوہ بنیادی سہولتوں کی فراہمی و اساتذہ کی ضروریات کا نگران ادارہ ہے لیکن جب اس دفتر کے ملازمین ہی بنیادی سہولتوں کی عدم موجودگی کی شکایت کرتے ہوئے خدمات کا بائیکاٹ کردیں اور یہ کہیں کہ ڈی ای او کے دفتر میں ہی بنیادی سہولتیں موجود نہیں ہیں تو ایسی صورت میں کیا کہا جائے اور کیسے یہ امید کی جائے کہ شہر حیدرآباد کے سرکاری اسکولوں کی حالت میں بہتری پیدا ہوگی ۔ حیدرآباد ڈسٹرکٹ ایجوکیشنل آفیسر کے عملہ نے آج ڈی ای او کے دفتر میں بنیادی سہولتوں کی عدم موجودگی کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے خدمات کا مقاطعہ کیا اور فوری طور پر بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے علاوہ دیگر دیرینہ مطالبات کی عاجلانہ تکمیل کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج منظم کیا ۔ احتجاجی ملازمین کی جانب سے دفتر میں صاف صفائی کے ناقص انتظام کے علاوہ بیت الخلاء اور پینے کے پانی کی عدم موجودگی کی شکایات کی گئی جس سے ایسا محسوس ہورہا تھا کہ یہ محکمہ تعلیم کا عملہ نہیں بلکہ کسی سرکاری اسکول کے طلبہ ہیں جو سہولتوں کی فراہمی کا مطالبہ کررہے ہیں ۔ ضلع ایجوکیشنل آفیسر کے دفتر کی اس زبوں حالی سے اندازہ کیا جاسکتا ہے کہ شہر کے سرکاری مدارس کی کیا صورتحال ہوگی اور طلبہ کو کن تکالیف کا سامنا کرنا پڑتا ہوگا ۔

بتایا جاتا ہے کہ ڈی ای او کے دفتر میں خدمات انجام دے رہے عملہ کی جانب سے کئے گئے اس خدمات کے بائیکاٹ کا ضلع انتظامیہ کی جانب سے نوٹ لیا گیا ہے اور بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے سلسلہ میں جو شکایات ہیں انہیں عاجلانہ طور پر حل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ سرکاری ملازمین کی اس حالت سے ایسا محسوس ہوتاہے کہ جو ادارہ اسکولوں میں سہولتوں و تعلیمی معیار کا نگران ادارہ ہے اس ادارے کے ملازمین جن مشکلات سے دوچار ہیں انہیں فوری طور پر حل کیا جانا چاہئے تاکہ وہ اپنے مسائل کے حل کے بعد غریب سرکاری مدارس میں تعلیم حاصل کررہے طلبہ کے مسائل کے حل کے لیے کوشش کرسکیں ۔ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد کے اسکولوں میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے مطالبہ کے ساتھ اب ان اسکولوں میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی کے ذمہ دار ادارے میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج شروع ہوچکا ہے ۔ جس سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ شہر میں بتدریج تعلیمی ڈھانچہ منہدم ہوتا جارہا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT