Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / دفعہ پر جموںو کشمیر عوام کے احساسات کا لحاظA 35

دفعہ پر جموںو کشمیر عوام کے احساسات کا لحاظA 35

وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ کا تیقن ، تنازعہ کو حل کرنے بات چیت کیلئے آمادگی ، وادی کی صورتحال میں بہتری

سری نگر۔11 ستمبر۔( سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے کشمیری علیحدگی پسندوں کو مسئلہ کشمیر پر مذاکرات کی دعوت دیتے ہوئے کہا کہ جو کوئی مجھ سے بات کرنا چاہتا ہے وہ اس کے لئے کھلے دل و دماغ سے تیار ہیں۔انہوں نے جموں وکشمیر کو خصوصی موقف عطا کرنے والی آئین ہند کی دفعہ 35A پر مبینہ طور پر منڈلا رہے خطرے پر کہا کہ مرکزی حکومت کوئی بھی ایسا قدم نہیں اٹھائے گی جس سے کشمیر کے لوگوں کے جذبات مجروح ہوں۔’’ہم اپنے پڑوسی ملک پاکستان سے اچھے تعلقات چاہتے ہیں اور اسے ہندستان میں دہشت گرد بھیجنے اور دہشت گرد کاروائیوں کی فنڈنگ کا سلسلہ بند کرنا چاہیے‘‘۔ راج ناتھ سنگھ پیر کے روز یہاں اپنے چار روزہ دورے کے تیسرے دن نیوز کانفرنس میں نامہ نگاروں سے بات چیت کررہے تھے ۔اس موقع پروزیراعظم دفتر میں وزیر مملکت ڈاکٹر جتیندر سنگھ اور ریاستی نائب وزیر اعلیٰ ڈاکٹر نرمل سنگھ بھی موجود تھے۔ مرکزی وزیر داخلہ نے کشمیر میں احتجاجی مظاہروں کے دوران پلیٹ گنس کے استعمال پر کہا کہ ’پاوا شیل‘کو اس کے متبادل کے طور پر متعارف کرایا گیا تھا لیکن وہ زیادہ موثر ثابت نہیں ہوا۔ سنگھ نے کشمیری نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ کسی کے بہکاوے میں آکر سنگباری نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ سیکورٹی فورسز سے کہاگیا ہے کہ کشمیر میں کہیں پر بھی طاقت کا حد سے زیادہ استعمال نہیں کیا جانا چاہئے ۔ کشمیر میں امن کے درخت سوکھے نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا ’’میرا ماننا ہے کہ کسی شک وشبے کا کوئی سوال ہی نہیں ہے ۔ ایک غیراہم مسئلہ کو اُچھالا جارہا ہے اور اس میں مرکزی حکومت کا کوئی رول نہیں ہے ۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ ہم اپنے پڑوسی ملک پاکستان سے اچھے تعلقات چاہتے ہیں اور اسے ہندوستان میں دہشت گرد بھیجنے اور دہشت گرد کاروائیوں کی فنڈنگ کا سلسلہ بند کرنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ بہت جلد پاکستان کو سرحد پر فائرنگ کا سلسلہ بند کرنے کیلئے مجبور کیا جائیگا ۔ نوشیرہ سرحد سے نقل مقام کرنے والوں کو اُنھوں نے تیقن دیا کہ آپ تھوڑا اور انتظار کریں ، پاکستان کو فائرنگ روکنے کیلئے مجبور کیا جائے گا ۔اگر پاکستان کی طرف سے ایک گولی بھی چلائی گئی پھر ہندوستان جواب میں فائرنگ کرتے ہوئے گولیوں کا کوئی حساب نہیں رکھے گا ۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان کو بہرصورت جنگ بندی کی خلاف ورزی روکنی ہوگی ۔

TOPPOPULARRECENT