Thursday , November 23 2017
Home / سیاسیات / دفعہA م 35 منسوخ ہوئی تو کشمیر میں مقامی لوگ نہ ہونگے :عمر عبداللہ

دفعہA م 35 منسوخ ہوئی تو کشمیر میں مقامی لوگ نہ ہونگے :عمر عبداللہ

جموں 14اگست (سیاست ڈاٹ کام ) نیشنل کانفرنس کے کارگذار صدر عمر عبداللہ نے آئین ہند کی دفعہ 35 اے کی منسوخی سے جموں وکشمیر پر پڑنے والے منفی اثرات سے لوگوں کو آگاہ کرنے کی مہم شروع شروع کرتے ہوئے بی جے پی پر اہلیان جموں کو غلط پروپیگنڈے کے ذریعے بیوقوف بنانے کا الزام عائد کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ دفعہ 35 اے منسوخ کی گئی تو ریاست کے دفاتر میں صرف دوسری ریاستوں سے تعلق رکھنے والے ملازمین نظر آئیں گے اور دفاتر میں ریاست میں بولی جانے والی زبانوں کو سمجھنے والے لوگ نہیں ملیں گے ۔ عبداللہ جو کہ ریاست کے سابق وزیر اعلیٰ بھی ہیں، نے پیر کے روز جموں میں واقع پارٹی ہیڈکوارٹر شیر کشمیر بھون میں دفعہ 35 اے سے متعلق آگاہی پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس کا نتیجہ یہ ہوگا کہ ہمارے جو سٹیٹ سبجیکٹ قوانین ہیں ، وہ ختم ہوجائیں گے ۔۔ ختم ہونے کے بعد مہاراجہ ہری سنگھ نے جن چار چیزوں پر روک لگائی تھی تو وہ روک ختم ہوگی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT