Friday , November 17 2017
Home / Top Stories / دلتوں تک رسائی کیلئے وزیراعظم مودی کی کوششیں ’چشم پوشی‘ : مایاوتی

دلتوں تک رسائی کیلئے وزیراعظم مودی کی کوششیں ’چشم پوشی‘ : مایاوتی

بی جے پی یا آر ایس ایس کا بندھوا لیڈر دلتوں یا پسماندہ طبقات کیلئے کچھ نہیں کرسکتا۔ بی ایس پی سربراہ کا خطاب
لکھنؤ 14 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کے عزائم کے خلاف دلتوں اور پسماندہ طبقات کو متنبہ کرتے ہوئے سابق چیف منسٹر اترپردیش مایاوتی نے آج کہاکہ اِس کے قائدین ’’آر ایس ایس کے بندھوا مزدوروں‘‘ جیسا ہی عمل کریں گے اور دعویٰ کیاکہ وزیراعظم نریندر مودی دیگر پسماندہ طبقات کے لئے شائد ہی کچھ ٹھوس اقدام کرسکتے ہیں حالانکہ وہ اِسی کمیونٹی سے تعلق رکھنے کا ادعا کرتے ہیں۔ بی ایس پی سربراہ نے ڈاکٹر امبیڈکر کو اُن کے 125 ویں یوم پیدائش پر خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے منعقدہ جلسہ میں اپنے سیاسی حریفوں کو نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ بی جے پی یا آر ایس ایس کسی دلت یا پسماندہ فرد کو وزیراعظم یا کسی ریاست کا چیف منسٹر ضرور بناسکتے ہیں لیکن وہ اپنے لوگوں کے لئے کچھ بھی نہیں کرسکتا۔ وہ ہمیشہ بی جے پی یا آر ایس ایس کا بندھوا مزدور رہے گا۔ مایاوتی کے ریمارکس اِس پس منظر میں سامنے آئے ہیں کہ بی جے پی نے یوپی یونٹ کے صدر کے طور پر پسماندہ طبقہ سے تعلق رکھنے والے کیشو پرساد موریا کا تقرر کیا ہے۔ مایاوتی نے کہاکہ نریندر مودی کی حکومت میں یہ بات صاف طور پر نظر آتی ہے، جو اِدھر اُدھر گھومتے ہوئے یہی کہتے ہیں کہ وہ او بی سی ہیں۔ اپنی ذات والے لوگوں کے لئے کچھ کرنا تو چھوڑیئے، اُنھوں نے چائے والوں کے لئے تک کچھ نہیں کیا ہے حالانکہ انھوں نے اِن چائے والوں کے پاس مفت کی چائے پی لی ہے۔

مایاوتی نے 2017 ء کے اسمبلی الیکشن کے لئے عملاً بگل بجاتے ہوئے برسر اقتدار سماج وادی پارٹی کو بھی نشانہ بنایا اور اُسے تمام محاذوں پر ناکام ہوجانے کا مورد الزام ٹھہرایا۔ نیز یہ وعدہ کیاکہ اگر اُنھیں عوام اقتدار سونپتے ہیں تو وہ خوف و ہراس اور کرپشن سے پاک سماج کو یقینی بنائیں گی۔ بی ایس پی سربراہ نے کانگریس لیڈر راہول گاندھی پر بھی تنقید کی کہ جب اُن کی پارٹی برسر اقتدار تھی تب اُنھوں نے دلت طلبہ کی خودکشیوں کا کوئی نوٹ نہیں لیا۔ اُنھوں نے حیدرآباد میں روہت ویمولا کی خودکشی کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ اب جبکہ کانگریس اقتدار سے محروم ہے ’یوراج‘ دیگر پارٹیوں کی حکمرانی والی ریاستوں میں گھوم پھر رہے ہیں اور دھمکانے والی سیاست چلارہے ہیں۔ بی جے پی پر نشانہ سادھتے ہوئے مایاوتی نے کہاکہ موریا کو بی جے پی نے ریاستی یونٹ کا صدر مقرر کیا ہے حالانکہ وہ مجرمانہ ریکارڈ کے حامل ہیں اور اِس سے قبل اِس پارٹی کے چیف منسٹر کلیان سنگھ جن کا تعلق بھی پسماندہ برادری سے ہے، وہ اپنی کمیونٹی کے لئے کچھ نہ کرسکے اور بس ایودھیا مندر کے بارے میں آر ایس ایس کے موقف کی تائید میں جٹے رہے، جس کے لئے اُنھیں اقتدار سے محروم بھی ہونا پڑا۔ مودی پر تنقید کرتے ہوئے مایاوتی نے کہاکہ اگرچہ وہ ریزرویشن کے مسئلہ پر ’سیاسی مجبوری‘ کی بناء برسر عام لب کشائی کرتے ہیں لیکن ایسا ظاہر ہوتا ہے کہ وہ محض چشم پوشی سے کام لے رہے ہیں۔ اگر وزیراعظم مودی کے ارادے صاف ہوتے تو کوٹہ کے بارے میں خدشات دور کرنے سے قبل وہ اپنے پارٹی والوں اور آر ایس ایس ورکرس کے خلاف کارروائی کئے ہوتے، جو ریزرویشن کو غیر مؤثر بنانے کے تعلق سے غلط بیانات جاری کرتے آرہے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT