Tuesday , August 14 2018
Home / Top Stories / دلت مسلم اتحاد کو پروان چڑھانے میں دعوت افطار شاندار پہل

دلت مسلم اتحاد کو پروان چڑھانے میں دعوت افطار شاندار پہل

ادارہ سیاست کی جانب سے عثمانیہ یونیورسٹی میں دعوت افطار ، مسلم و غیر مسلم طلبہ کی شرکت ، پروفیسرس اور جناب ظہیر الدین علی خاں کی شرکت
حیدرآباد۔13جون(سیاست نیوز) عثمانیہ یونیورسٹی میںدلت مسلم اتحاد کی مثال اس وقت دیکھنے کو ملی جب ادارے سیاست کی جانب سے یونیورسٹی کے دلت مسلم طلبہ اور پروفیسر کے لئے دعوت افطار کا اہتمام کیاگیا تھا۔ روایتی انداز میں ہزاروں کی تعداد میںدلت اور مسلم طلبہ نے ایک ساتھ بیٹھ کا افطار کیا۔ میناریٹی اسکالرس اور دانشور فورم کے اشتراک سے منعقدہ دعوت افطار کی نگرانی جناب ظہیر الدین علی خان نے کی ۔ جبکہ جناب شفیق الرحمن ریٹائر ڈ آئی اے ایس‘ جناب میجر قادری‘ پروفیسر پی ایل ویشویشوار رائو‘ پروفیسر نریندر کمار جے این یو‘ڈاکٹر اسماء زہرہ چیف آرگنائزر مسلم پرسنل لاء بورڈ ویمن وینگ‘پروفیسر جوشی ‘ افتخار احمد ایڈوکیٹ‘اے سی پی نرسیا ‘ سرکل انسپکٹر جے جگن‘پروفیسر سپنا‘ پروفیسر جوشی‘ عثمان بن محمد الہاجری‘ مقبول الہاجری ‘ پروفیسر ویلاداری‘ درگم بھاسکر‘ ورنگل روی‘ شرد چمار‘ نریندر توڑا‘ ڈاکٹر انجن رائو‘ کے علاوہ غیر مسلم پروفیسر س او رفیکلٹی کی بڑی تعداد نے بھی اس دعوت افطار میںشرکت کرتے ہوئے ادارے سیاست کے اقدام کی ستائش کی ۔ غیرمسلم پروفیسر نے افطار سے قبل مقدس ماہ صیام کی اہمیت اور روزوں کی افادیت پر روشنی ڈالی اور کہاکہ تلنگانہ ایک ایسی ریاست ہے جہاں افطار کے موقع پر گنگاجمنی تہذیب کی بے شمار مثالیں دیکھنے کو ملتی ہیں۔ اپنے تاثرات میں پروفیسر س نے بتایا کہ غیرمسلم ہونے کے باوجود وہ پورے ماہ افطار سے لطف اندوز ہوتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ سحری کے اوقات کا ہمیں انداز ہ نہیںہوتا اس لئے سحری کرنے کاموقع ہمیںنہیںملتا مگر دعوت افطار ہویا پھر گھر میں وہ ضرور افطار کا اہتمام کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ بیشتر پروفیسرس نے کہاکہ جہاں سارے ملک میںنفرت کا ماحول بنایاجارہا ہے وہیں تلنگانہ بالخصوص عثمانیہ یونیورسٹی جیسے تاریخی تعلیمی ادارے میں دلت اور مسلم طلبہ کے لئے دعوت افطار کا اہتمام ادارے سیاست کی ایک شاندار پہل ہے جو نہ صرف ریاست میں دلت مسلم اتحاد کو پروان چڑھانے میںمددگار ثابت ہوگی بلکہ سارے ملک کے لئے بھی اس طرح دعوت افطار ایک مثال کے طور پر پیش کی جائے گی۔ مقررین نے خطابات میںجہاں روزوں کی افادیت کا ذکر کیاوہیں پر ملک کے موجودہ حالات میںنوجوان پر عائد ذمہ داریوں سے بھی انہیںواقف کروایا ۔ بعد ازاں باجماعت نماز مغرب کا بھی اہتمام کیاگیا جس میں یونیورسٹی کے غیرمسلم طلباء نے بھی ٹوپی لگائے پورے خشوع وخصوع کے ساتھ نماز مغرب ادا کی ۔ پچھلے کئی سالوں سے ادارے سیاست یونیورسٹی طلبہ بالخصوص دلت او ردیگر غیرمسلم طلباء کے لئے یونیورسٹی میں دعوت افطار کا اہتمام کرتے آرہا ہے ۔ اور ہر سال دعوت افطار میںطلبہ کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے ۔ دعوت افطار کے اختتام پر یونیورسٹی طلبہ جنھوں نے دعوت افطار کو کامیاب بنانے کے لئے انتھک محنت انہیںجناب ظہیرالدین علی خان او ردیگر مہمانوں کے ہاتھوں تہنیت کے طور پر شال پوشی کی گئی ۔ شیخ فہیم‘ شیخ عثمان کے علاوہ حیات حسین حبیب ‘ اسلم عبدالرحمن‘ فہیم انصاری نے یونیورسٹی طلبہ کے ساتھ ملکر افطاری اور حلیم کی تقسیم کی ذمہ داریاں نبھائی۔

TOPPOPULARRECENT