Thursday , September 20 2018
Home / شہر کی خبریں / دلسکھ نگر بم دھماکہ کیس تحسین اختر اور ضیاء الرحمن کی حیدرآباد منتقلی

دلسکھ نگر بم دھماکہ کیس تحسین اختر اور ضیاء الرحمن کی حیدرآباد منتقلی

حیدرآباد ۔ /15 اپریل (سیاست نیوز)نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی (این آئی اے) عہدیدار اندرون دو یوم انڈین مجاہدین کے مبینہ کمانڈرس تحسین اختر عرف مونو اور ضیاء الرحمن عرف وقاص جو دلسکھ نگر جڑواں بم دھماکے کیس کے ملزمین ہے کو حیدرآباد منتقل کرکے یہاں کی ایک عدالت میں پیش کیا جائے گا ۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ این آئی اے کی ٹیم مذکورہ انڈین مج

حیدرآباد ۔ /15 اپریل (سیاست نیوز)نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی (این آئی اے) عہدیدار اندرون دو یوم انڈین مجاہدین کے مبینہ کمانڈرس تحسین اختر عرف مونو اور ضیاء الرحمن عرف وقاص جو دلسکھ نگر جڑواں بم دھماکے کیس کے ملزمین ہے کو حیدرآباد منتقل کرکے یہاں کی ایک عدالت میں پیش کیا جائے گا ۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ این آئی اے کی ٹیم مذکورہ انڈین مجاہدین کے کارکن کو پی ٹی وارنٹ پر دہلی سے حیدرآباد منتقل کریں گے ۔ واضح رہے کہ تحسین اختر جو بم بنانے میں مہارت رکھتا ہے کو دہلی پولیس کی اسپیشل سیل نے مارچ میں گرفتار کرکے جیل بھیج دیا تھا ۔ تحقیقاتی ایجنسیوں کا دعویٰ ہے کہ تحسین اختر اکٹوبر 2013 ء میں نریندر مودی کے جلسہ عام میں بم دھماکے کئے تھے اور اس کے علاوہ فبروری 2013 ء میں دلسکھ نگر میں جڑواں بم دھماکے میں اہم رول ادا کیا تھا ۔ پاکستانی شہری ضیاء الرحمن عرف وقاص کو اسپیشل سیل پولیس نے راجستھان سے گرفتار کیا تھا اور اس پر یہ الزام ہے کہ اس نے سال 2010 ء سپٹمبر میں جامع مسجد کے قریب فائرنگ کی تھی ۔ ڈسمبر 2010 ء میں واراناسی میں بم دھماکے کئے تھے ۔ جولائی 2011 ء میں ممبئی میں ‘ اگست 2012 ء میں پونے میں اور فبروری 2013 ء میں دلسکھ نگر میں جڑواں بم دھماکے انجام دیئے تھے ۔ تحسین اور وقاص کو این آئی اے اندرون دو یوم حیدرآباد منتقل کرتے ہوئے انہیں فرسٹ ایڈیشنل میٹروپولیٹین سیشن جج کے اجلاس پر پیش کرکے اپنی تحویل میں لے لی ۔

TOPPOPULARRECENT