Wednesday , December 13 2017
Home / جرائم و حادثات / دلشاد نگر سرقہ واقعہ، بھانجی بہو کی کارستانی

دلشاد نگر سرقہ واقعہ، بھانجی بہو کی کارستانی

مالی پریشانی دور کرنے آٹو ڈرائیور کی مدد سے رہزنی
حیدرآباد ۔ /18 مئی (سیاست نیوز) کمشنر ٹاسک فورس نے آصف نگر دلشاد نگر میں پیش آئے سنسنی خیز رہزنی کی واردات جس میں خاتون کو دھمکاکر طلائی زیورات اور نقد رقم کا سرقہ کرنے والی 5 رکنی ٹولی بشمول خاتون کی رشتہ کی بہو کو گرفتار کرلیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ شوکت فاطمہ کا مکان میں تنہا موجود رہنے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے ان کے بہن کی بہو 40 سالہ سہیلہ جبین نے مبینہ طور پر ایک آٹو ڈرائیور محمد انور کو اطلاع دی کہ ان کی خالہ ساس مکان میں تنہا رہتی ہے اور ان کے خسر فالج کا شکار ہیں اور یہاں پر رہزنی کرنے پر کافی رقم حاصل کی جاسکتی ہے ۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ٹاسک فورس مسٹر بی لمبا ریڈی نے اس سلسلے میں مزید تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ سہیلہ جبین جو معاشی پریشانیوں کا شکار تھی شوکت فاطمہ کے مکان میں رہزنی کرواکر رقومات حاصل کرنے کا منصوبہ تیار کیا تھا ۔ /14 مئی کو محمد انور نے اپنے تین ساتھیوں محمد رحیم ، شیخ ابراہیم اور محمد مزمل کی مدد سے مافر ریسیڈنسی دلشاد نگر کے ایک فلیٹ میں داخل ہوتے ہوئے شوکت فاطمہ کے منہ پر پلاسٹر لگادیا اور مکان میں موجود طلائی زیورات کا سرقہ کرکے فرار ہوگئے ۔ ٹاسک فورس نے پانچوں ملزمین کو گرفتار کرتے ہوئے ان کے قبضے سے مسروقہ 4.7 طلائی زیورات اور 4 موبائیل فون حاصل کرلئے ۔ بتایا جاتاہے کہ رہزنی کے فوری بعد آٹو ڈرائیور انور نے مسروقہ مال سہیلہ جبین کے حوالے کیا تھا ۔ گرفتار شدہ ملزمین کو ٹاسک فورس نے آصف نگر پولیس اسٹیشن کے حوالے کردیا ۔

TOPPOPULARRECENT