Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / دمشق میں شامی فوج پر داعش کے حملے ، حلب میں 18 ہلاک

دمشق میں شامی فوج پر داعش کے حملے ، حلب میں 18 ہلاک

دمشق ۔ 6 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) داعش کے جنگجوؤں نے دمشق کے نزدیک حکومت کی عمل داری والے ایک علاقوں پر حملہ کیا ہے۔ادھر شمالی شہر حلب میں باغیوں نے کرد آبادی والے علاقے پر گولہ باری کی ہے جس کے نتیجے میں اٹھارہ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔داعش نے ایک بیان میں کہا ہے کہ انھوں نے دمشق کے شمال مشرق میں پچاس کلومیٹر دور واقع تشرین پاور اسٹیشن پر حملہ کیا ہے۔شامی فوج کے ایک ذریعے نے اس حملے کی تصدیق کی ہے لیکن کہا ہے تمام حملہ آوروں کو ہلاک کردیا گیا ہے۔شامی فوج کے ذریعے کا کہنا ہے کہ داعش کا منگل کی رات دمشق کے باہر حملہ ان کی تدمر سے پسپائی کا ردعمل ہوسکتا ہے۔شامی فوج نے اسی ہفتے روسی فضائیہ کی مدد سے داعش کے جنگجوؤں کو وسطی صوبے حمص میں واقع ایک اور قصبے القریتین سے بھی لڑائی کے بعد نکال باہر کیا ہے اور وہاں دوبارہ قبضہ کر لیا ہے۔برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے اطلاع دی ہے کہ داعش کے حملہ آوروں نے دمشق میں شمال مشرق میں واقع ایک ہوائی اڈے کے نزدیک فوجی تنصیبات اور چوکیوں کو خودکش دھماکوں سے نشانہ بنایا ہے۔انھوں نے بارود سے بھری پانچ کاریں دھماکوں سے اڑائی ہیں جن کے نتیجے میں بارہ فوجی ہلاک ہوگئے ہیں۔شامی فوج نے دمشق کے شمال مشرق میں واقع قصبے دیمیر پر گولہ باری کی ہے اور فضائی حملے کیے ہیں۔اس قصبے پر داعش کے حامی ایک باغی گروپ نے قبضہ کررکھا ہے۔رصدگاہ کا کہنا ہے کہ فضائی حملوں میں نو شہری اور داعش کے پندرہ جنگجو مارے گئے ہیں۔داعش کی بارود سے بھری پانچ گاڑیوں کے ڈرائیور جھڑپوں میں ہلاک ہوگئے ہیں۔شامی فوج کے ذریعے کا کہنا ہے کہ دیمیرکے نواحی علاقے میں جھڑپوں میں تیرہ جنگجو مارے گئے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT