Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / دوبئی کا برج خلیفہ ٹاور عالیشان ، چندرا بابو نائیڈودوبئی کا برج خلیفہ ٹاور عالیشان

دوبئی کا برج خلیفہ ٹاور عالیشان ، چندرا بابو نائیڈودوبئی کا برج خلیفہ ٹاور عالیشان

، چندرا بابو نائیڈوبندرگاہوں سے حمل و نقل کے اقدامات ، چیف منسٹر کا دورہ دوبئیحیدرآباد ۔ 23 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے آج اپنے قیام دوبئی کے دوران اپنی ٹیم کے ہمراہ دوبئی میں تعمیر کردہ طویل القامت ٹاور ’ برج خلیفہ ‘ کا تفصیلی مشاہدہ کیا اور اس ٹاور کی انتہائی خوبصورت و معیاری تعمیر کی ستائش کی اور اپنی مسرت کا اظہار کیا ۔ بتایا جاتا ہے کہ چیف منسٹر نے برج خلیفہ ٹاور کی تعمیرات سے متعلق تفصیلات سے واقفیت حاصل کی ۔ بتایا جاتا ہے کہ قبل ازیں نائیڈو نے دوبئی میں بزنس ایمبریٹس ٹاورس میں ڈی پی ورلڈ گروپ صدر نشین اور چیف ایکزیکٹیو آفیسر ( سی ای او ) کے ساتھ ملاقات کی اور بتایا کہ آئندہ دنوں میں بحری جہازوں کے ذریعہ سامان کی حمل و نقل مکمل طور پر مشرقی ساحلی سمندر کے راستہ سے کرنے کے اقدامات کئے جائیں گے ۔ چیف منسٹر نے مزید بتایا کہ ریاست آندھرا پردیش میں بندرگاہیں وسیع تر صلاحیتوں کے حامل و بہتر خدمات کی اہلیت رکھتے ہیں ۔۔آندھرا پردیش میں عنقریب چندرنا ویلیج مالس : پی پلاراؤll وزیر سیول سپلائز حکومت آندھرا پردیش مسٹر پی پلا راؤ نے کہاکہ آندھرا پردیش میں بہت جلد 6500 ’ چندرنا ویلیج مالس ‘ قائم کئے جائیں گے اور ان چندرنا ویلیج مالس میں کوئی بھی افراد دستیاب تمام اشیاء بالخصوص اشیائے مایحتاج وغیرہ کی خریدی کرسکتے ہیں اور بتایا کہ ان مالس کو ’ ریلائنس ‘ فیوچر گروپس کے حوالہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔ علاوہ ازیں راشن ڈپوز سے مربوط کر کے چندرنا ویلیج مالس قائم کئے جارہے ہیں ۔ وزیر سیول سپلائز نے بتایا کہ ان ویلیج مالس کا راشن کارڈز سے کوئی تعلق نہیں رہے گا ۔ مسٹر پی پلا راؤ نے اپوزیشن جماعتوں بالخصوص وائی ایس آر کانگریس پارٹی کو اپنی سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کے بیرونی دورہ کے تعلق سے عوام میں غلط فہمیاں پیدا کرنے کے لیے ہی غلط الزامات عائد کررہے ہیں ۔ وزیر موصوف نے بتایا کہ چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو اپنے بیرونی دوروں کے ذریعہ ریاست آندھرا پردیش کے لیے کم از کم دو ہزار کروڑ روپئے کی سرمایہ کاری حاصل کرنے کے لیے کوشاں ہیں  اور اس بات کی قوی توقع کی جارہی ہے کہ چیف منسٹر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو مذکورہ رقومات سے کہیں زیادہ رقومات پر مشتمل سرمایہ کاری کے ساتھ ریاست کو واپس لوٹیں گے ۔ وزیر سیول سپلائز مسٹر پی پلا راؤ نے اخباری نمائندوں کے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ مسٹر ریونت ریڈی کے مسئلہ کی یکسوئی چیف منسٹر کی واپسی کے ساتھ ہی ہوجانے کی قوی توقع ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT