Tuesday , November 21 2017
Home / ہندوستان / دونوجوانوں کو سزائے موت کا حکم 8سالہ لڑکے کا اغواء اور بہیمانہ قتل پرعدالت کا فیصلہ

دونوجوانوں کو سزائے موت کا حکم 8سالہ لڑکے کا اغواء اور بہیمانہ قتل پرعدالت کا فیصلہ

ناگپور۔/4فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) مقامی عدالت نے دو نوجوانوں کو ایک آٹھ سالہ لڑکے کے اغواء اور بیدردی سے قتل پر سزائے موت سنائی۔ یہ واقعہ 2014میں پیش آیا تھا۔ پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کشور سونوا نے 21سالہ دھن لال دوارے اور اس کے دوست 25سالہ اروند ابھیلاش سنگھ کو یوگ چندک کی ہلاکت پر یہ سزاء سنائی۔ جج نے کہا کہ محض دولتمند بننے کے خواب کو پورا کرنے ان دونوں نے اس جرم کا ارتکاب کیا۔ احاطہ عدالت آج عوام سے کھچا کھچ بھرا ہوا تھا اور دونوں مجرمین کے علاوہ مہلوک لڑکے کے والد بھی اس موقع پر موجود تھے۔ جج سونووا نے کہا کہ اگرچہ ملزمین نوجوان ہیں لیکن ان کے ساتھ کسی طرح کا رحم کا برتاؤ نہیں کیا جاسکتا۔انہیں ستمبر 2014ء میں سکنڈ کلاس کے طالب علم کو بہیمانہ ہلاک کرنے کا مجرم قرار دیا گیا۔ جج نے کہا کہ بچوں کے اغوا اور قتل کے معاملات سے نمٹنے کے سلسلہ میں ہائی کورٹ اور سپریم کورٹ کی رہنمایانہ ہدایات کو ہم نے پیش نظر رکھا ہے اور ان مجرمین کے جرم کے ارتکاب کے ثبوت کے طور پر جو شواہد پیش کئے گئے ہیں ان پر ہم مطمئن ہیں۔ اس کے بعد جج نے ان دونوں کو پھانسی پر لٹکانے کا حکم دیا۔ جج نے ان دونوجوانوں کو سازش کیلئے سزائے قید اور 10ہزار روپئے جرمانہ کے علاوہ شواہد مٹانے کیلئے سات سال قید اور 5ہزار روپئے جرمانہ کی سزا ء بھی سنائی۔ جج نے کہا کہ ان دو نوجوانوں نے یوگ چندک کا اس لئے اغوا کیا کیونکہ وہ بھاری تاوان کی رقم کا مطالبہ کرتے ہوئے دولت مند بننا چاہتے تھے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT