Tuesday , December 11 2018

دونوں شہروں میں امریکہ و اسرائیل کے خلاف شدید احتجاج

بعد نماز جمعہ مساجد کے سامنے مظاہرہ ، یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کی مذمت

حیدرآباد۔15ڈسمبر(سیا ست نیوز) دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں آج بعد نماز جمعہ مسلمانوں نے القدس (یروشلم) کو اسرائیل کا دارالحکومت قرار دیئے جانے کے امریکی فیصلہ کی مذمت کرتے ہوئے زبردست احتجاج کیا اور امریکہ و اسرائیل کے خلاف مظاہرہ کیا گیا۔ مسجد عزیزیہ مہدی پٹنم کے علاوہ جامع مسجد دارالشفاء کے روبرو میدان میں اسرائیل و امریکہ کے خلاف نعرے لگائے گئے اور امریکی اعلان کو واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا۔امریکہ کی جانب سے یروشلم کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دیئے جانے کے بعد سے عالم اسلام میں غم و غصہ کی لہر پائی جاتی ہے اور اس کا اثر آج شہر حیدرآباد میں دیکھنے کو ملا جہاں ہزاروں کی تعداد میں نوجوانوں نے پر امن انداز میں احتجاج کرتے ہوئے اسرائیل و امریکہ کے خلاف مظاہرہ کرتے ہوئے اسرائیل کو غاصبانہ قبضہ کرنے والی مملکت قراردیا اور فلسطینی عوام کی حمایت کا اعلان کیا گیا۔ جامع مسجد دارالشفاء میں امیر امارت ملت اسلامیہ مولانا محمد حسام الدین ثانی جعفر پاشاہ کی زیرقیادرت احتجاجی مظاہرہ کیا گیا وار اس احتجاجی مظاہرہ میں مولانا نصیر الدین کے علاوہ دیگر موجود تھے۔ جامع مسجد دارالشفاء کے روبرو درسگاہ جہادوشہادت کے نوجوانوں نے بطور احتجاج اسرائیلی پرچم نذرآتش کرنے کی کوشش کی جسے پولیس نے ناکام بناتے ہوئے کئی نوجوانوں کو حراست میں لے لیا۔ قبل ازیں جامع مسجد دارالشفاء کے روبرو اسرائیلی و امریکی پرچم فرش پر بچھائے گئے تھے جنہیں جوتوں سے روندا گیا۔مولانا جعفر پاشاہ نے مسئلہ فلسطین اور مسجد اقصی کے معاملہ میں اختیار کردہ یہودی منصوبہ کو ناکام بنانے کے لئے احتجاج کو ناگزیر قرار دیتے ہوئے کہا کہ احتجاج پر امن انداز میں کیا جانا چاہئے اور یہ علامتی احتجاج درج کرواتے ہوئے صرف اللہ اکبر کے نعرے لگائے جائیں گے۔

بعد نماز جمعہ مولانا محمد حسام الدین اور مولانا نصیر الدین کے علاوہ دیگر اہم شخصیتوں نے مسجد کے روبرو کچھ دیر کیلئے مظاہرہ کیا بعد ازاں نوجوانوں نے برہمی کے عالم میں اسرائیلی پرچم نذرآتش کرنے کی کوشش کی ۔مسجد عزیزیہ کے قریب امریکی فیصلہ کے خلاف مظاہرہ کیا گیا اور اس احتجاجی مظاہرہ سے خطاب کے دوران زونل صدر ایس آئی او جناب لئیق احمد خان نے کہا کہ مسئلہ فلسطین صرف انسانیت کا مسئلہ نہیں ہے بلکہ مسلمانوں کیلئے یہ انتہائی حساس اور مذہبی مسئلہ ہے۔انہوں نے اپنے خطاب کے دوران پولیس کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ محکمہ پولیس جمہوری ملک ہندستان میں احتجاج سے روکنے کی کوشش کر رہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ امریکہ کی جانب سے یروشلم (القدس) کو اسرائیلی دارالحکومت کے طور پر تسلیم کئے جانے کا فیصلہ دراصل فلسطینی عوام کے حقوق کو سلب کرنے کی کوشش ہے۔انہوں نے یروشلم کی تاریخ سے واقف کرواتے ہوئے کہا کہ اس خطہ کو مذہبی اعتبار سے اہمیت حاصل ہے اور مسلمانان عالم قبلہ اول کے تحفظ کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے۔بعد ازاں مسجد عزیزیہ کے اطراف سڑک پر نوجوانوں نے ریالی منظم کرتے ہوئے اسرائیل اور امریکہ کے خلاف شدید غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے امریکہ سے مطالبہ کیا کہ اسرائیلی مملکت کے دارالحکومت کے طور پر یروشلم کو تسلیم کرنے کے اعلان سے فوری دستبرداری اختیار کی جائے۔ریالی کے دوران نوجوان اسرائیل اور امریکہ کے خلاف نعروں کے بیانر و پلے کارڈس تھامے ہوئے تھے ۔ درسگاہ جہاد و شہادت نے بھی احتجاجی مظاہرہ کیا۔ پولیس نے ڈی جے ایس کے کارکنوں کو گرفتار کیا۔ صدر ڈی جے ایس محمد عبدالماجد نے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے خلاف احتجاج کیا، پولیس نے ان کے بشمول ڈی جے ایس کے 18 کارکنوں کو گرفتار کرلیا اور ضمانت پر رہا بھی کیا۔

TOPPOPULARRECENT