Wednesday , January 17 2018
Home / شہر کی خبریں / دونوں شہروں کی مساجد میں باران رحمت کے لیے خصوصی دعائیں

دونوں شہروں کی مساجد میں باران رحمت کے لیے خصوصی دعائیں

اللہ رب العزت کی بارگاہ میں توبہ و استغفار ، ائمہ و خطباء کی عامتہ المسلمین سے خصوصی اپیل

اللہ رب العزت کی بارگاہ میں توبہ و استغفار ، ائمہ و خطباء کی عامتہ المسلمین سے خصوصی اپیل
حیدرآباد۔/4جولائی، ( سیاست نیوز) دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد کی مختلف مساجد میں آج باران رحمت کیلئے خصوصی دعائیں کی گئیں۔ موسم باراں کے آغاز کے باوجود بارش نہ ہونے کے سبب نہ صرف حیدرآباد و سکندرآباد بلکہ ریاست و ملک میں بھی عوام کئی پریشانیوں کا شکار ہیں۔ حیدرآباد و سکندرآباد میں گرمی کی شدت میں کسی قسم کی کمی واقع نہ ہونے کے سبب جولائی کے آغاز کے باوجود موسم گرما کی طرح گرمی برقرار ہے۔ دونوں شہروں میں کئی اسکولوں میں آج بھی طلبہ کی خاطر خواہ حاضری نہیں ہے جس کی بنیادی وجہ گرمی کی شدت قرار دی جارہی ہے۔ برقی کٹوتی، پینے کے پانی کی قلت کے علاوہ گرمی کی شدت سے پریشان مسلمانوں نے آج بعد نماز جمعہ اللہ رب العزت کی بارگاہ میں اپنے گناہوں سے معافی مانگتے ہوئے باران رحمت کیلئے دعائیں کیں۔ ماہ رمضان المبارک کے سبب گرمی کی شدت و تلخی میں کچھ زیادہ ہی اضافہ محسوس کیا جارہا ہے۔ شہر کی تمام مساجد میں نماز جمعہ کے موقع پر رحمت باراں کیلئے خصوصی دعائیں کی گئیں۔خطیب حضرات نے اپنے خطبوں کے دوران بارش کے نہ ہونے کی وجوہات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ انسان جب گناہوں میں مبتلاء ہوکر اپنے خالق کو بھول جاتا ہے تو بارش کے نہ ہونے اور بہت زیادہ ہونے جیسے عذاب نازل ہوتے ہیں۔ ائمہ و خطباء نے عامتہ المسلمین سے اپیل کی کہ وہ اپنے گناہوں سے توبہ کرتے ہوئے رب کائنات سے رحم و کرم طلب کریں تاکہ سارے ملک میں خشک سالی و قحط سالی کی جو صورتحال پیدا ہورہی ہے اس سے انسانیت کو محفوظ رکھا جاسکے۔ بارش کے نہ ہونے کے سبب نہ صرف انسان مشکلات کا شکار ہوتے ہیں بلکہ اس کے اثرات ہر مخلوق پر مرتب ہوتے ہیں خواہ وہ چرند ہو یا پرند ہوں یا حشرات الارض ان تمام کو خشک سالی و قحط سالی کے سبب مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ ائمہ کرام نے عامتہ المسلمین سے اپیل کی کہ وہ بوقت افطار بارش کیلئے خصوصی دعائیں کریں تاکہ اللہ رب العزت اپنے روزہ دار بندوں کی دعاؤں کو قبول فرماتے ہوئے رحم و کرم والی بارش نازل فرمائے۔ علماء کرام نے عامتہ المسلمین سے خواہش کی کہ وہ اپنے معصوم بچوں سے بھی باران رحمت کیلئے دعائیں کروائیں چونکہ اللہ تعالیٰ معصوم اٹھے ہوئے ہاتھوں کو رد نہیں کرتا بلکہ ان کی طرف سے مانگی گئی دعاؤں کو قبول کرتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT