Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / دونوں شہروں کے مرکزی مقامات سے کچرے کی عدم نکاسی

دونوں شہروں کے مرکزی مقامات سے کچرے کی عدم نکاسی

صفائی عملہ کی غیر معلنہ ہڑتال کا شبہ ۔ رات دیر گئے کچرے کی صفائی کی بجائے جلایا جارہا ہے
حیدرآباد ۔ /27 اکٹوبر (سیاست نیوز) دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد بالخصوص شہر کے مرکزی مقامات سے کچرے کی عدم نکاسی سے ایسا محسوس ہورہا ہے کہ شہر میں ایک مرتبہ پھر بلدیہ حیدرآباد کے صفائی عملہ نے ہڑتال شروع کردی ہے جبکہ ایسا نہیں ہے ۔ دونوں شہروں کے کئی علاقوں سے کچرے کی عدم نکاسی سے بدبو و تعفن پھیل رہا ہے ۔ شہر کے مرکزی سیاحتی مقام تاریخی چارمینار کے اطراف کی سڑکوں پر عدم صفائی و کچرے کی نکاسی نہ ہونے سے سڑک کے بیچوں بیچ تک کچرا دیکھا جارہا ہے ۔ چارمینار بس اسٹانڈ کے متصل کنڈی سے گزشتہ کئی دنوں سے کچرے کی عدم نکاسی کے سبب کچرا سڑک پر آگیا اور گزشتہ شب کچرے کی نکاسی کے بجائے کچرے میں آگ لگادی گئی جس سے ماحول آلودہ ہوگیا ۔ کچرے میں لگائی گئی آگ سے اطراف کے مکینوں کو سانس لینے میں دشواری کی شکایات موصول ہوئی ۔ رات دیر گئے کچرے میں آگ لگائے جانے سے بدبو اور تعفن اور کثیف دھنویں کے بادل نظر آرہے تھے ۔ شہر میں کچرے کی عدم نکاسی کی شکایات معمول بن چکی ہیں لیکن جب مرکزی مقامات پر یہی صورتحال پیدا ہونے لگے تو اس سے اندازہ کیا جاسکتا ہے کہ شہر کے محلہ جات بالخصوص رہائشی علاقوں کی صورتحال کس حد تک ابتر ہوچکی ہوگی ۔ چارمینار سے کوٹلہ عالیجاہ جانے والی سڑک جہاں ساؤتھ زون بلدیہ کا دفتر موجود ہے اس پر کچرے کی نکاسی کو یقینی نہیں بنایا جارہا ہے ۔ یہی صورتحال چوک ، حسینی علم ، اعتبار چوک کے علاوہ گلزار حوض و پنجہ شاہ کی سڑکوں کی بھی جہاں کچرے کی بروقت نکاسی یقینی نہ بنائے جانے سے بدبو ؤ تعفن پھیل رہا ہے ۔ دونوں شہروں میں سوائن فلو اور ڈینگو جیسے خطرناک امراض کے خدشات پائے جارہے ہیں اور آئے دن متاثرین کی اطلاعات موصول ہو رہی ہیں اس کے باوجود جی ایچ ایم سی کی جانب سے اختیار کردہ رویہ ناقابل فہم ہے ۔ بلدی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ شہر میں صفائی کے انتظامات کو بہتر بنانے کیلئے سخت گیر اقدامات کی ضرورت ہے لیکن اعلیٰ عہدیدار اس مسئلہ پر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں جس کی وجہ سے کچرے کی نکاسی کا کنٹراکٹ حاصل کرنے والے ٹھیکے دار من مانی کررہے ہیں ۔ شہر کے کئی محلہ جات سے روزانہ شکایات موصول ہونے کے باوجود بھی عدم صفائی سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ بلدیہ خود شہر سے کچرے کی نکاسی میں دلچسپی نہیں رکھتی ۔ حکومت کی جانب سے سوچھ حیدرآباد و سوچھ تلنگانہ کے نعروں کے ساتھ چلائی گئی مہم کے دوران کچھ دن تک سڑکوں پر صفائی ہوتی نظر آئی لیکن موجودہ صورت میں شہر کی سڑکوں کو دیکھتے ہوئے کوئی نہیں کہہ سکتا کہ شہر میں کسی وقت سوچھ حیدرآباد یا سوچھ تلنگانہ مہم چلائی گئی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT