Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / دونوں شہروں کے کلاک ٹاورس کی گھڑیاں غیر کارکرد

دونوں شہروں کے کلاک ٹاورس کی گھڑیاں غیر کارکرد

نگہداشت کے ادارے خاموش تماشائی ، خوبصورت عمارتیں تباہی کے دہانے پر
حیدرآباد۔23 جولائی (سیاست نیوز) دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد کے مختلف مقامات پر موجود کلاک ٹاورس پر گھڑیاں غیر کارکرد ہوچکی ہیں لیکن حکومت اور ان عمارتوں کے نگران ادارے و محکمہ جات خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔ شہر کے مختلف مقامات پر موجود گھڑیوں کو دیکھتے ہوئے ایسا لگتا ہے کہ شہر میں وقت رک سا گیا ہے لیکن وقت کی رفتار وہی ہے مگر حکومت نااہلی و غیر ذمہ داری کے باعث شہریوں کی سہولت کے لئے تعمیر کئے گئے خوبصورت کلاک ٹاورس اپنا مقصد کھوتے جارہے ہیں۔ معظم جاہی مارکٹ، چوک گھڑیال، سکندرآباد کلاک ٹاور کی حالت عرصہ دراز سے انتہائی ناگفتہ بہ ہوچکی ہے لیکن اس کے باوجود ان عمارتوں کے نگران ادارے اس پر توجہ دینے میں کسی قسم کی سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کررہے ہیں جس کی وجہ سے شہر حیدرآباد کی یہ خوبصورت عمارتیں تباہی کے دہانے پر پہنچتی جارہی ہیں۔ جامعہ مسجد چوک کے روبرو واقع چوک گھڑیال کے چاروں طرف موجود گھڑیوں میں وقت کئی ماہ سے رکا ہوا ہے اور یہی صورتحال معظم جاہی مارکٹ کی ہے جہاں گھڑیوں کی حالت انتہائی افسوسناک ہوچکی ہے بلکہ گھڑیوں کے پرزے ٹوٹ کر گرنے لگے ہیں اس کے باوجود معظم جاہی مارکٹ جوکہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی نگرانی میں ہے اس کی تزئین نو یا کم از کم گھڑیوں کو وقت دکھانے کے قابل نہیں بنایا جاسکا۔ چوک گھڑیال میں بھی ایک جانب گھڑی پوری طرح سے ٹوٹ چکی ہے لیکن اس کی مرمت کے لئے بھی کوئی اقدامات نہیں کئے جارہے ہیں جس سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ حکومت اور سرکاری محکمہ جات ان گھڑیالوں کی حالت کو بہتر بنانے میں کوئی دلچسپی نہیں رکھتے۔ اگر واقعی ایسا ہے تو حکومت ایسے اداروں و تنظیموں سے تعاون حاصل کرتے ہوئے ان تاریخی عمارتوں کو بہتر بناسکتی ہے جو شہر کی تاریخ کو باقی رکھتے ہوئے شہر میں موجود آثار قدیمہ کی حفاظت کے لئے جدوجہد کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT