دو مسلم ڈرائیوروں کی بے مثال دیانتداری، دو خاندانوں کو تباہی سے بچالیا

حیدرآباد۔/17جنوری، ( سیاست نیوز) دو مسلم ڈرائیوروں کی ایمانداری اور نیک نیتی نے آج دو خاندانوں کی زندگیوں کو تباہ ہونے سے بچالیا اور ڈرائیور کے پیشہ کی اہمیت میں اضافہ کردیا۔ ایک مسلم ڈرائیور نے غیر مسلم کے خاندان کو تباہی سے بچاتے ہوئے مثال قائم کی۔ فرقہ پرستی کا زہر گھول رہے اس پُرفتن دور میںمسلمانوں نے پھر ایک بار اپنے عمل سے اس بات کا ثبوت دے دیا کہ وہ بھلائی کا کوئی موقع نہیں چھوڑتے چاہے حالات اور ماحول کیسا بھی ہو ۔ دو مسلم ڈرائیوروں کی ایمانداری کے واقعات ایس آر نگر اور جیڈی میٹلہ پولیس حدود میں پیش آئے۔ ان کی اس ایمانداری سے محکمہ پولیس بھی متاثر ہوگیا اور پولیس اسٹیشن میں انہیں تہنیت پیش کی گئی اور انہیں پولیس کمشنر کے ذریعہ بہترین شہری ہونے کا اعزاز دلانے کا تیقن دیا۔ چہرے پر بڑی داڑھی ، ٹوپی اور متشرع دکھائی دینے والے شیخ نظیر کی ایمانداری کے چرچے قطب اللہ پور کے علاوہ اب شہربھر میں ہونے لگے ہیں۔ دلکشا نگر بڑی مسجد قطب اللہ پور علاقہ کے ساکن شیخ نظیر پیشہ سے کیاب ڈرائیور ہیں۔ گزشتہ روز شیخ نظیر اپنی کیاب میں گراہک کو دلسکھ نگر سے جیڈی میٹلہ لے جارہے تھے اور جیسے ہی گراہک کو انہوں نے اس کو منزل پر چھوڑ دیا وہ واپس ہوگئے اور اپنے گھر پہنچنے کے بعد انہوں نے دیکھا کہ گراہک کار کے اندر اپنا بیاگ بھول چکا ہے۔ فوری طور پر شیخ نظیر نے اپنے پڑوسی نسیم کو طلب کیا جو سی آئی ڈی میں بحیثیت ہوم گارڈ خدمات انجام دے رہا ہے اور اس کی مدد سے یہ لوگ فوری پولیس اسٹیشن پہنچے اور گراہک کو اطلاع دی کہ وہ پریشان نہ ہوں ان کا بیاگ وہ ملاقات کرتے ہوئے حاصل کرلیں اور انہوں نے گراہک کو جیڈی میٹلہ پولیس اسٹیشن طلب کیا۔ پولیس اسٹیشن میں موجود سرکل انسپکٹر مسٹر شنکر ریڈی نے نظیر کے حلیہ کو دیکھا اور سارے واقعہ کو غور سے سماعت کیا۔

اس دوران گراہک نریش بھی وہاں پہنچ گیا ، سرکل انسپکٹر کی نگرانی میں شیخ نظیر نے نریش کو ان کا سامان حوالے کیا جس میں 3 تولے طلائی زیورات اور تقریباً 4 لاکھ روپئے نقد رقم موجود تھی۔ جیڈی میٹلہ پولیس کے سرکل انسپکٹر نے شیخ نظیر کی ایمانداری سے اس قدر متاثر ہوئے کہ انہوں نے فوری شیخ نظیر کو تہنیت پیش کرتے ہوئے ان کی گلپوشی اور شال پوشی کی اور زبردست ستائش کی۔ اسی طرح کے ایک اور واقعہ میں جو ایس آر نگر پولیس حدود میں پیش آیا ۔ سرکل انسپکٹر محمد وحید الدین نے آٹو ڈرائیور محمود کی گلپوشی کرتے ہوئے انہیں تہنیت پیش کی جنہوں نے اپنی بستی کے ایک خاندان کو بڑی پریشانی پریشانی سے بچالیا جس کے گھر میں شادی طئے ہوچکی تھی ، رحمت نگر بورا بنڈہ علاقہ کے ساکن محمود جو پیشہ سے آٹو ڈرائیور ہیں، محمود اپنے آٹو میں جارہے تھے اورانہوں نے ایک دکان کے قریب آٹو کو روکا تھا اس دوکان سے نکل کر ایک لڑکا دوسرے آٹو میں سامان رکھنے کے بجائے محمود کے آٹو میں سامان کو رکھ دیا اور محمود آٹو لیکر چلے گئے اور آٹو میں سامان نہ ملنے پر یہ خاتون بہت پریشان ہوگئی ان کے گھر شادی تھی۔ محمود نے جب اپنے آٹو میں اجنبی بیاگ دیکھا تو پریشان ہوگیا اور اس نے اس بیاگ کو پولیس کے سپرد کردیا اور اطلاع کے ساتھ ہی پولیس انسپکٹر وحید الدین نے سامان کو حاجی کے افراد کے حوالے کردیا جس میں ساڑھے چھ تولے طلائی زیورات اور دیگر سامان موجود تھا۔ سامان ملنے کے بعد حاجی کے افراد خاندان نے مسرت کا اظہار کیا اور محمود کی ستائش کی۔

TOPPOPULARRECENT