Tuesday , January 23 2018
Home / Top Stories / دہشت گردوں نے ہندوستانی جمہوریت پر حملہ کی کوشش کی

دہشت گردوں نے ہندوستانی جمہوریت پر حملہ کی کوشش کی

ہزاری باغ ( جھارکھنڈ ) 6 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر اعظم نریندر مودی نے وادی کشمیر میں کل ہوئے دہشت گردانہ حملوں کی شدید مذمت کی ہے اور کہا یہ یہ حملے در اصل ہندوستانی جمہوریت پر حملہ کرنے کی شرمناک کوشش تھے ۔ یہاں ایک انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے ملک کی سکیوریٹی کا تحفظ کرتے ہوئے اپنی زندگیوں کی عظیم قربانی پیش کرنے پر فوج

ہزاری باغ ( جھارکھنڈ ) 6 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر اعظم نریندر مودی نے وادی کشمیر میں کل ہوئے دہشت گردانہ حملوں کی شدید مذمت کی ہے اور کہا یہ یہ حملے در اصل ہندوستانی جمہوریت پر حملہ کرنے کی شرمناک کوشش تھے ۔ یہاں ایک انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے ملک کی سکیوریٹی کا تحفظ کرتے ہوئے اپنی زندگیوں کی عظیم قربانی پیش کرنے پر فوجی اہلکاروں کی ستائش کی اور کہا کہ قوم کبھی انہیں فراموش نہیں کریگی ۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں نے ہندوستانی جمہوریت پر حملہ کرنے کی شرمناک کوشش کی ہے لیکن ہمارے بہادر جوانوں نے ملک کی سکیوریٹی کا تحفظ کرنے اپنی زندگیاں قربان کردیں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ جھارکھنڈ کے بہادر جوان سنکلپ کمار شکلا اور دوسرے جوانوں کو خراج پیش کرتے ہیں جنہوں نے اپنی زندگیاں قربان کردیں۔ سنکلپ کمار شکلا کی شہادت ریاست میں آئندہ نسلوں میں بھی یاد رکھی جائیگی ۔ پنجاب ریجمنٹ کے سنکلپ کمار شکلا ان آٹھ فوجی اہکاروں اور تین پولیس ملازمین میں شامل ہیں جو کل مہرا فوجی کیمپ اوری سیکٹر میں ہوئے حملے میں ہلاک ہوگئے تھے ۔

یہ حملہ چھ عسکریت پسندوں نے کیا تھا جن کے تعلق سے سمجھا جاتا ہے کہ وہ سرحد پار سے آئے تھے ۔ یہ حملہ ایسے وقت میں کیا گیا ہے جبکہ تین دن قبل ہی ریاست میں ہورہے اسمبلی انتخابات کے دوسرے مرحلہ میں 72 فیصد رائے دہندوں نے اپنے ووٹ کا استعمال کیا تھا ۔ واضح رہے کہ پہلے مرحلہ میں بھی کثیر تعداد میں رائے دہندوں نے اپنے حق رائے دہی سے استفادہ کیا تھا ۔ کل ہوئے اس حملہ اور سکیوریٹی فورسیس کے ساتھ جھڑپوں کے واقعات میں جملہ 21 افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔ ان میں پاکستان سے کام کرنے والی تنظیم لشکرطیبہ کا ایک دہشت گرد بھی شامل تھا ۔ نریندر مودی ان حملوں کے باوجود پیر کو سرینگر میں ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرنے والے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ حملہ رائے دہندوں کے جوش و خروش کے نتیجہ میں امید کا جو ماحول پیدا ہوا ہے اس کو متاثر کرنے کی کوشش ہے ۔ حملہ کی مذمت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں کو معاف نہیں کیا جائیگا ۔ مودی نے کہا کہ ہم خاموش نہیں بیٹھیں گے اور پاکستان سے کام کرنے والے دہشت گردوں کو مناسب جواب دیا جائیگا ۔

یہ حملہ بزدلانہ کارروائی تھی اور وہ کشمیر میں رائے دہندوں کے جوش و خروش کی وجہ سے بوکھلاہٹ کا شکار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں نے یہ واضح کردیا ہے کہ وہ ترقی اور خوشحالی کیلئے جمہوریت اور جمہوری عمل میں یقین رکھتے ہیں علیحدگی پسندی میں نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کسی بھی قیمت پر کشمیر میں شہید ہونے والے سکیوریٹی جوانوں کی قربانی کو فراموش نہیں کرسکتا ۔ جھارکھنڈ کے عوام کو چاہئے کہ وہ اس دن کو بلیدان کیلپے یاد رکھیں۔ مودی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ریاست جھارکھنڈ میں زبردست وسائل اور صلاحیتیں ہیں اور وہ ترقی کے سفر میں آگے آسکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ ذات پات اور پسماندہ وہ ترقی یافہت کی سیاست کو ترک کرتے ہوئے ترقی کی سیاست کی جائے ۔ تاکہ جھارکھنڈ اور ہندوستان دونوں ترقی کرسکیں۔

TOPPOPULARRECENT