دہشت گردی ‘ ترقی اور خوشحالی کیلئے سنگین خطرہ : سشما

تمام ممالک کو قومی ذمہ داریاں سمجھنے کی ضرورت ۔ شنگھائی کو آپریشن کونسل اجلاس سے خطاب

دوشانبے 12 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) وزیر خارجہ سشما سوراج نے آج شنگھائی کو آپریشن کونسل کے رکن ممالک بشمول پاکستان سے کہا ہے کہ وہ قومی ذمہ داریوں کو سمجھیں اور ایک دوسرے سے تعاون کریں ۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی ترقی اور خوشحالی کیلئے آج بھی سب سے سنگین خطرہ ہے ۔ انہوں نے 50 بلین ڈالرس مالیتی چین ۔ پاکستان معاشی راہداری کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایک علاقہ کو دوسرے سے مربوط کرنے کی جو کوششیں ہو تی ہیں انہیں باہمی احترام ‘ سالمیت ‘ علاقائی اہمیت ‘ مشاورت اور بہتر حکمرانی کے ساتھ شفافیت اور دیرپا ہونے کے اصولوں کی بنیاد پر آگے بڑھایا جانا چاہئے ۔ ہندوستان نے چین ۔ پاکستان معاشی راہداری کی مخالفت کی ہے اور چین سے اپنا احتجاج درج کروایا ہے کیونکہ اس کو مقبوضہ کشمیر کے علاقوں سے گذارا جا رہا ہے ۔ سشما سوراج دو روزہ شنگھائی کو آپریشن کونسل اجلاس میں شرکت کیلے تاجکستان کے دارالحکومت پہونچی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی ترقی اور خوشحالی کے یکساں مقاصد کیلئے آج بھی سنگین خطرہ بنی ہوئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے اثرات چونکہ بڑھتے جا رہے ہیں ایسے میں حکومتوں کو اپنی قومی ذمہ داریوں کو سمجھنے کی ضرورت ہے اور ایک دوسرے سے تعاون کرنا چاہئے ۔ انہوں نے پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی موجودگی میں یہ بات کہی ۔ انہوں نے کہا کہ عالمی معاشی تبدیلیوں سے سبھی کو فائدہ ہوا ہے ۔ ہمیں آپس میں مزید تجارت اور سرمایہ کاری تعاون میں اضافہ کرنے کی ضرورت ہے ۔ ہمیں کھلی ‘ مستحکم بین الاقوامی تجارت کو فروغ دینا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان ماضی میں ہوئی اس چوٹی کانفرنس میں نوجوانوں سے ریاڈیکل خیالات کے خلاف جو اپیل کی گئی تھی اس کی آج بھی تائید کرتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ شنگھائی کوآپریشن کونسل کے پیش مشن 2018 کی کامیابی پر تمام رکن ممالک کے وزرائے خارجہ کو مبارکباد پیش کی ۔ ہندوستان نے پہلی مرتبہ اس طرح کی مشقوں میں شرکت کی تھی ۔ انہوں نے افغانستان کے تعلق سے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان افغانستان میں قیام امن کی ایسی کوششوں کی تائید کرتا ہے جو افغانستان کی قیادت میں ہوں ‘ افغانستان کیلئے ہوں اور افغان کنٹرول والی ہوں۔ اس سے افغانستان کو پرامن ‘ محفوظ ‘ مستحکم اور معاشی طور پر بہتر ملک کے طور پر ابھرنے میں مدد مل سکتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT