Wednesday , November 22 2017
Home / Top Stories / دہشت گردی ‘ دنیا بھر میں مذہبی آزادی کیلئے سنگین خطرہ

دہشت گردی ‘ دنیا بھر میں مذہبی آزادی کیلئے سنگین خطرہ

تمام مذاہب والوں کو عبادت کی آزادی والے بہتر کل کی امید ۔ صدر ڈونالڈ ٹرمپ کا خطاب
واشنگٹن 15 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ نے کہا کہ دہشت گردی دنیا بھر میں مذہبی آزادی کیلئے سنگین خطرہ ہے اور انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ جب تمام عقیدوں کے لوگ بشمول ہندو اگر اپنی مرضی سے عبادت کرسکیں تو ایک بہتر کل کی آسکتا ہے ۔ اپنے ہفتہ وار ریڈیو اور ویب خطاب میں ٹرمپ نے کہا کہ امریکہ بہت ابتداء ہی سے عبادت کی آزادی پر عمل کرتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ براعظم امریکہ میں جو اولین لوگ بسنے آئے تھے ان سے یہی وعدہ کیا گیا تھا اور یہی وعدہ ہے جو ہماری بہادروں نے برقرار رکھا ہے اور کئی صدیوں سے ملک کے عام شہریوں کیلئے یہ حق حاصل ہے ۔ ٹرمپ نے اپنے خطاب میں کہا کہ افسوس کی بات یہ ہے کہ دنیا بھر میں کئی لوگوں کو یہ آزادی حاصل نہیں ہے ۔ آج دنیا میں مذہبی آزادی کو جو سب سے سنگین خطرہ لاحق ہے وہ خطرہ دہشت گردی کا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پام سنڈے کے موقع پر جب دنیا بھر میں عیسائی برادری کے افراد مقدس ہفتہ کے آغاز کی تیاری کر ہرے تھے آئی ایس نے مصر میں دو عیسائی گرجا گھروں پر حملہ کرتے ہوئے 45 افراد کو موت کے گھاٹ اتار دیا ہے ۔ ٹرمپ نے کہا کہ امریکہ اس طرح کے بہیمانہ حملے کی مذمت کرتا ہے ۔ ہم ان افراد کے غم میں شریک ہیں جو اپنے عزیزوں سے محروم ہوگئے ہیں۔ ہم ایک بہتر کل کیلئے طاقت اور فہم و فراست کیلئے بھی دعا کرتے ہیں ۔ ہم ایک ایسے کل کے متمنی ہیں جہاں تمام مذاہب کے ماننے والے جیسے عیسائی اور مسلمان ‘ یہودی اور ہندو اپنے دل کی آواز کو قبول کریں اور اپنے ضمیر کے مطابق عبادت کرسکیں۔ انہوں نے کہا کہ خدا کی مہربانی سے زندگی ہمیشہ موت پر غالب آئی ہے ۔ آزادی ہمیشہ غلامی پر غالب آئی ہے اور عقیدہ ہمیشہ ہی ڈر و خوف کو پیچھے چھوڑنے میں کامیاب رہا ہے ۔ یہی ہماری امید کا ذریعہ ہے اور یہی مستقبل کے تعلق سے ہمارا یقین ہے ۔ انہوں نے کئی برسوں سے مشکلات کا سامنا کر رہے امریکیوں کے نام بھی پیام دیا اور کہا کہ وہ عوام کو بتانا چاہتے ہیں کہ موجودہ وائیٹ ہاوز ان کیلئے جدوجہد کر رہا ہے ۔ حکومت ہر امریکی شہری کیلئے جدوجہد کر رہی ہے جسے پیچھے چھوڑ دیا گیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT