Saturday , January 20 2018
Home / ہندوستان / دہشت گردی کیخلاف کارروائی سے قبل حافظ سعید کو نشانہ بنائیں

دہشت گردی کیخلاف کارروائی سے قبل حافظ سعید کو نشانہ بنائیں

ممبئی ۔ /18 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) شیوسینا نے آج کہا ہے کہ پاکستان کو چاہئیے کہ پشاور میں ایک اسکول پر ہلاکت خیز حملوں کے پیش نظر اس کی سرزمین سے دہشت گردوں کی سرکوبی سے قبل جمعیتہ الدعوہ کے سربراہ حافظ سعید کو کیفر کردار تک پہنچائے جو کہ ممبئی میں دہشت گردانہ حملوں کے اصل سازشی ہیں ۔ پارٹی ترجمان سامنا کے اداریہ میں کہا گیا ہے کہ پاکستا

ممبئی ۔ /18 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) شیوسینا نے آج کہا ہے کہ پاکستان کو چاہئیے کہ پشاور میں ایک اسکول پر ہلاکت خیز حملوں کے پیش نظر اس کی سرزمین سے دہشت گردوں کی سرکوبی سے قبل جمعیتہ الدعوہ کے سربراہ حافظ سعید کو کیفر کردار تک پہنچائے جو کہ ممبئی میں دہشت گردانہ حملوں کے اصل سازشی ہیں ۔ پارٹی ترجمان سامنا کے اداریہ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان اب دہشت گردوں کا مرکز اور منبع بن گیا ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ حکومت نے حافظ سعید جیسے عسکریت پسندوں کی خوشامدی کیلئے سزائے موت پر پابندی کو برخاست کردیا لیکن اب پشاور میں بچوں کے قتل عام کے بعد پاکستانی حکومت کے ہوش ٹھکانے آگئے ہیں ۔ اخبار کے اداریہ میں بتایا گیا ہے کہ حافظ سعید کہتا ہے کہ پشاور سانحہ کیلئے وزیراعظم ہند نریندر مودی ذمہ دار ہیں

اور وہ ہندوستان سے انتقام لیں گے ۔ جس کے پیش نظر نواز شریف کو چاہئیے کہ اس شخص (سعید) کو سب سے پہلے کنٹرول میں رکھیں اور دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی کارروائی پر یہ دنیا اس وقت اعتماد نہیں کرسکتی تاوقتیکہ حافظ سعید جیسے عسکریت پسندوں کو جڑ پیڑ سے اکھاڑدیا نہیں جاتا ۔ واضح رہے کہ ممبئی حملوں کے اصل سازشی حافظ سعید ہندوستان کے انتہائی مطلوب افراد کی فہرست میں ہے جبکہ نومبر 2008 ء میں پیش آئے اس حملہ میں 166 افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔ یہ بھی ایک اتفاق ہے کہ پاکستان میں انسداد دہشت گردی عدالت سے کل ممبئی کے ایک اور منصوبہ ساز لشکر طیبہ کے کمانڈر ذکی الرحمن لکھوی کو ضمانت پر رہا کردیا گو کہ ان کے خلاف دہشت گردی کے الزامات ثابت کرنے کیلئے ٹھوس ثبوت موجود تھے ۔ سامنا کے اداریہ میں مزید کہا گیا کہ پشاور کے اسکول میں سینکڑوں بچوں کے قتل عام پرہمیں انتہائی افسوس ہے اور پاکستان کی سرزمین ہرایک ملک کے لئے خطرہ بن گئی ہے ۔ لہذا تمام ممالک کو دہشت گردوں کے خلاف جدوجہد کیلئے متحدہ ہوجانا چاہئیے کیونکہ پاکستانی حکومت تنہا یہ کام نہیں کرسکتی ۔

TOPPOPULARRECENT