Monday , January 22 2018
Home / دنیا / دہشت گردی کے خلاف اقوام متحدہ قرار داد پر عمل کیا جائے : ہندوستان

دہشت گردی کے خلاف اقوام متحدہ قرار داد پر عمل کیا جائے : ہندوستان

اقوام متحدہ 24 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان نے اقوام متحدہ سلامتی کونسل سے کہا ہے کہ وہ دہشت گردی سے نمٹنے سے متعلق اپنی قرارداد پر کسی استثنی کے بغیر عمل آوری کرے ۔ ہندوستان نے کہا کہ سیاسی مقاصد کیلئے دہشت گردی کا استعمال تشدد کے واقعات میں اضافہ کا موجب ہو رہا ہے ۔ اقوام متحدہ میںہندوستانی سفیر اشوک مکرجی نے سلامتی کونسل کے کا

اقوام متحدہ 24 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان نے اقوام متحدہ سلامتی کونسل سے کہا ہے کہ وہ دہشت گردی سے نمٹنے سے متعلق اپنی قرارداد پر کسی استثنی کے بغیر عمل آوری کرے ۔ ہندوستان نے کہا کہ سیاسی مقاصد کیلئے دہشت گردی کا استعمال تشدد کے واقعات میں اضافہ کا موجب ہو رہا ہے ۔ اقوام متحدہ میںہندوستانی سفیر اشوک مکرجی نے سلامتی کونسل کے کام کاج کے طریقہ پر ایک کھلے مباحث میں حصہ لیتے ہوئے دہشت گردی کے خلاف بین الاقوامی برادری کی کوششوں میں رہنے والی کمی کا اظہار کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کا یہ ماننا ہے کہ سلامتی کونسل کو چاہئے کہ وہ اپنے چارٹر کے تحت اسے تمام اقدامات کرنے چاہئیں جن سے دہشت گردی پر قابو پایا جاسکے ۔ اس کے علاوہ اقوام متحدہ کو چاہئے کہ وہ دہشت گردی سے نمٹنے سے متعلق اپنی قرار دادوں پر کسی استثنی کے بغیر عمل آوری کو یقینی بنائے ۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی مقاصد کی تکمیل کیلئے دہشت گردی کا استعمال اس لعنت اور اس کی وجہ سے ہونے والے تشدد میں اضافہ کا موجب بن رہا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ان کے خیال میں موجودہ حالات میں یہ ضروری ہے کہ اقوام متحدہ دہشت گردی سے نمٹنے سے متعلق قرار داد پر عمل آوری کیلئے اپنے ارکان کو ایک مقررہ وقت کی مہلت دے اور پھر ان سے رپورٹ حاصل کرے ۔ مکرجی نے اس بار پر زور دیا کہ دہشت گردی تیزی سے ابھرتا ہوا واحد انتہائی اہم چیلنج ہے جس سے بین الاقوامی امن اور سلامتی کی برقراری مشکل ہوتی جا رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ابتدائی طور پر اقوام متحدہ کو دہشت گردی سے نمٹنے اپنی قرار داد پر عمل آوری کو یقینی بنانے کی کوششوں کا آغاز کرنا چاہئے اور رکن ممالک پر زور دینا چاہئے کہ وہ ایک مقررہ وقت میں اقوام متحدہ کی قرار داد پر عمل آوری کرے ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کا فی الحال یہ احساس ہے کہ اقوام متحدہ کے طریقہ کار میں جو اس کی تاسیس کے وقت سے رائج ہے ان دفعات پر زور نہیں دیا جارہا ہے جو اہمیت کے حامل ہیں اور ان کے نتیجہ میں حالات سے نمٹنے میں مشکلات پیش آ رہی ہیں اور دہشت گردی کو تقویت حاصل ہوتی جا رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT