Friday , November 24 2017
Home / Top Stories / دہلی بلدی انتخابات میں 53 فیصد رائے دہی

دہلی بلدی انتخابات میں 53 فیصد رائے دہی

الیکٹرانک ووٹنگ مشین میں خامیوں کی شکایات
نئی دہلی ۔ /23 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) قومی دارالحکومت دہلی میں بلدی انتخابات کیلئے آج تقریباً 53 فیصد رائے دہی ریکارڈ کی گئی جبکہ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (ای وی ایم) میں خامیوں کی شکایات بھی موصول ہوئی ہیں ۔ آج صبح 8 بجے رائے دہی کا آغاز بالکل سست رہا تاہم کچھ دیر بعد پولنگ بوتھس کے باہر عوام کی قطاریں دیکھی گئی ۔ 2012 ء بلدی انتخابات میں 53.23 فیصد رائے دہی ریکارڈ کی گئی تھی ۔ ریاستی الیکشن کمشنر ایس کے سریواستو نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ آج رائے دہی پرامن رہی ۔ انہوں نے کہا کہ 18 ای وی ایم کو بیاٹری یا بٹن سے متعلق مسائل کی بناء تبدیل کیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ 13 ہزار پولنگ اسٹیشنوں میں صرف 18 ای وی ایم کی تبدیلی اس بات کا ثبوت ہے کہ اس میں کسی طرح کی چھیڑ چھاڑ یا غلطی کا امکان نہیں ہے ۔ تاہم چیف منسٹر اروند کجریوال نے ٹوئٹ کیا کہ سارے دہلی میں ای وی ایم میں خرابی کی اطلاعات ملی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو ووٹر سلپ ہونے کے باوجود رائے دہی کی اجازت نہیں دی گئی ۔ اسٹیٹ الیکشن کمشنر کیا کررہے ہیں ۔ ریاستی الیکشن کمیشن کو ای وی ایم میں خرابی کی 9 شکایات موصول ہوئیں ۔ ان میں سے  5 شکایات شمالی دہلی ، 3 جنوبی اور 1 مشرقی دہلی سے موصول ہوئی ہیں ۔

اگزٹ پولس میں بی جے پی کی کامیابی کا دعویٰ
٭٭ دو اگزٹ پولس میں یہ دعویٰ کیا گیا ہے کہ بی جے پی غیرمعمولی کامیابی حاصل کرے گی اور عام آدمی پارٹی و کانگریس کا صفایا ہوجائے گا ۔ عام آدمی پارٹی نے اسمبلی انتخابات میں 70 نشستوں کے منجملہ 67 پر کامیابی کے ساتھ اقتدار حاصل کیا لیکن اگزٹ پولس کے مطابق 2 سال میں اس کی مقبولیت کا گراف کافی نیچے چلا گیا ہے ۔ آج 270 وارڈس کیلئے رائے دہی ہوئی اور اگزٹ پولس کے مطابق بی جے پی تقریباً 200 وارڈس پر کامیابی حاصل کرے گی ۔ کانگریس کو بھی انتخابات میں خاطر خواہ کامیابی ظاہر نہیں کی گئی ہے ۔ دو خانگی نیوز چیانلس ٹائمس ناؤ اور اے بی پی نیوز نے یہ اگزٹ پولس جاری کئے جس پر الیکشن کمیشن نے انہیں نوٹس دیتے ہوئے وجوہات طلب کی ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT