دہلی میں انتخابی ناکامی کے بعد کانگریس میں داخلی جنگ

نئی دہلی۔ 12 فروری(سیاست ڈاٹ کام) کانگریس میں دہلی اسمبلی انتخابات میں شرمناک شکست کے بعد داخلی جنگ چھڑ گئی۔ سینئر کانگریس قائد شیلا ڈکشٹ نے پارٹی کے چیف منسٹری کے امیدوار اجئے ماکن پر سخت تنقید کی اور پارٹی نے عملی اعتبار سے انہیں خاموش ہوجانے کی ہدایت دی۔ شیلا ڈکشٹ نے پارٹی میں اپنے کٹر حریف پر بے باک انداز میں تنقید کرتے ہوئے کہا

نئی دہلی۔ 12 فروری(سیاست ڈاٹ کام) کانگریس میں دہلی اسمبلی انتخابات میں شرمناک شکست کے بعد داخلی جنگ چھڑ گئی۔ سینئر کانگریس قائد شیلا ڈکشٹ نے پارٹی کے چیف منسٹری کے امیدوار اجئے ماکن پر سخت تنقید کی اور پارٹی نے عملی اعتبار سے انہیں خاموش ہوجانے کی ہدایت دی۔ شیلا ڈکشٹ نے پارٹی میں اپنے کٹر حریف پر بے باک انداز میں تنقید کرتے ہوئے کہا کہ مجھے ان پر ترس آتا ہے۔ اجئے ماکن حالات کو درست کرنے کے قابل ہی نہیں تھے، لیکن انہوں نے سوچا کہ سب کچھ تنے تنہا کرلیں گے۔ انہوں نے کسی کو بھی اپنے ساتھ نہیں لیا۔ واضح طور پر وہ اپنے انداز میں کام کرنا چاہتے تھے، لیکن اس سے کانگریس پارٹی کو کوئی مدد نہیں ملی۔

پی سی چاکو نے شیلا ڈکشٹ پر جوابی وار کرتے ہوئے کہا کہ بہتر ہے کہ وہ خاموش ہوجائیں اور پارٹی کو ان کے نظریات کی توثیق کی ضرورت نہیں ہے۔ ماکن کے حامی اور صدر پردیش کانگریس دہلی اروندر سنگھ لولی نے کہا کہ انتخابات کے بعد مشورہ دینے سے کوئی فائدہ نہیں ہے۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ لمحہ آخر میں شیلا ڈکشٹ نے غلطی کی تھی اور اجئے ماکن کی تائید کی تھی۔ لمحہ آخر میں یہ فیصلہ کیا گیا تھا۔ لولی نے انتخابات میں حصہ نہیں لیا تھا۔ ماکن پارٹی میں جوش اور ولولہ پیدا نہیں کرسکے۔ انہوں نے 2013ء تک 15 سالہ کانگریسی حکومت کے کارناموں کو اُجاگر نہیں کیا۔ سابق چیف منسٹر شیلا ڈکشٹ نے کہا کہ وہ جلد ہی سونیا گاندھی سے ملاقات کرکے دہلی میں کانگریس کے احیاء کے بارے میں بات چیت کریں گی۔

TOPPOPULARRECENT