Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / دہلی میں دو کمسن لڑکیوں کے ریپ کی شرمناک وارداتیں

دہلی میں دو کمسن لڑکیوں کے ریپ کی شرمناک وارداتیں

نئی دہلی، 17 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) قومی دارالحکومت دہلی میں ایک ڈھائی سالہ کے بشمول دو کمسن لڑکیوں کی بے رحمانہ عصمت ریزی کی گھناؤنی حرکتیں کی گئیں جبکہ ایک ہفتہ قبل ہی ایک نابالغ پر خوفناک جنسی حملہ کیا گیا تھا، جس کے ساتھ حریف پارٹیوں کے درمیان شدید غم وغصہ اور سیاسی جارحیت چھڑ گئی جس میں چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال نے پولیس کو مورد الزام ٹھہرایا کہ وہ خواتین کو سکیورٹی کی فراہمی میں مکمل ناکام ہے اور یہ جاننا چاہا کہ وزیراعظم اور دہلی لیفٹننٹ گورنر کیا کررہے ہیں۔ دونوں متاثرہ لڑکیاں علحدہ دواخانوں میں زیرعلاج ہیں، جہاں دونوں کی حالت مستحکم ہے اور وہ سنبھل رہی ہیں۔ پہلے کیس میں گزشتہ شب مغربی دہلی کے نہال وہار میں رام لیلا ایونٹ سے دو موٹر سائیکل سوار افراد نے ڈھائی سالہ لڑکی کا اغوا کیا۔ بعد میں وہ ایک پارک میں پائی گئی جس کے بدن سے بہت خون بہہ رہا تھا اور وہ کرب سے رو رہی تھی۔ اس معاملے میں ابھی تک کوئی گرفتاریاں نہیں ہوئی ہیں۔ اس کیس میں اب تک بڑا سراغ سی سی ٹی وی کا منظر ہے جس میں موٹربائیک کا رجسٹریشن نمبرجزوی طور پر نظر آرہا ہے۔ پولیس اس فوٹیج کا جائزہ لے رہی ہے تاکہ ملزمین کی شناخت ہوسکے۔ دوسرے واقعہ میں پانچ سالہ لڑکی کو کل شام مشرقی دہلی کے آنند وہار علاقہ کی سلم بستی میں ایک شریک کرایہ دار اور اُس کے دو ساتھیوں نے اپنی ہوس کا اجتماعی شکار بنایا۔ اس لڑکی کے والدین مزدور پیشہ ہیں اور وہ تب گھر میں تنہا تھی جب ملزمین نے لڑکی کو لالچ دے کر اس کے گھر کے ٹھیک اوپر اپنی رہائش گاہ میں بلایا۔ جب یہ واقعہ منظرعام پر آیا تو پڑوسیوں نے تینوں خاطیوں کو پولیس کے حوالے کردیا۔ ان کی شناخت پرکاش، ریوتی اور سیتارام کی حیثیت سے کی گئی ہے۔دہلی کمیشن برائے خواتین کی چیرپرسن سواتی مالیوال نے دونوں متاثرین کی اسپتالوں میں عیادت کے بعد ان وارداتوں کو ’’سراسر قابل نفرت‘‘ اور ’’شرمناک‘‘ قرار دیا۔ انھوں نے ٹویٹ کیا: ’’صبح نیند سے بیدار ہوئی تو 2.5 سالہ اور 5 سالہ لڑکیوں کے گینگ ریپ کے 2 واقعات معلوم ہوئے ۔ 2.5 سالہ کے بدن سے خون کا رسنا بند نہیں ہورہا تھا۔ اس صورتحال پر دہلی کب جاگے گی؟ کب تک ہندوستانی دارالحکومت میں لڑکیوں سے بے رحمی جاری رہے گی۔‘‘

 

 

TOPPOPULARRECENT