Wednesday , December 13 2017
Home / ہندوستان / دہلی میں یکم نومبر تک پٹاخوں کی فروخت پر امتناع

دہلی میں یکم نومبر تک پٹاخوں کی فروخت پر امتناع

نئی دہلی۔9 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) اِس سال دیوالی کے دوران دہلی۔این سی آر میں پٹاخے بیچے نہیں جائیں گے کیوں کہ سپریم کورٹ نے آج ان کے فروخت پر یکم نومبر تک پابندی عائد کردی جو ان کی خرید و فروخت سے تعلق رکھنے والے تاجرین اور کاروباری لوگوں کے لیے بڑا جھٹکا ہے۔ فاضل عدالت نے کہا کہ اس کا گزشتہ ماہ کا حکم نامہ جو پٹاخوں کی فروخت پر حکم التوا کی عبوری طور پر برخاستگی اور فروخت کی اجازت دینے سے متعلق رہا، اب یکم نومبر سے ہی نافذ العمل ہوگا جبکہ روشنیوں کا تہوار گزرے 12 یوم ہوچکے ہوں گے۔ آج کے حکم نامے کے فوری اثر کے تعلق سے بھی عدالت عظمی نے وضاحت کردی اور 12 ستمبر کے آرڈر کی مطابقت میں پٹاخوں کی فروخت کے لیے پولیس کے جاری کردہ عبوری لائسنسوں کو فی الفور معطل کردینے کا حکم جاری کیا۔ جسٹس اے کے سیکری کی زیر قیادت بنچ نے کہا کہ 11 نومبر 2016ء کے حکم نامے کو جس کے ذریعہ لائسنسوں کو معطل کیا گیا، ایک موقع دیا جانا چاہئے تاکہ معلوم ہوجائے کہ آیا اس کا بالخصوص دیوالی کے دوران مثبت اثر پڑے گا یا نہیں۔ عدالت نے اپنی گزشتہ سال کی ہدایت میں ایسے تمام لائسنسوں کو معطل کردیا تھا جو پٹاخوں کی فروخت کی اجازت دیتے ہیں چاہے وہ ہول سیل ہو یا ریٹیل۔ یہ ہدایت این سی آر علاقے کے اندرون تا احکام ثانی جاری کی گئی تھی۔ فاضل عدالت نے 2005ء میں ایسی ہدایت دی تھی کہ رات 10 بجے اور صبح 6 بجے کے درمیان زوردار آواز پیدا کرنے والے پٹاخے جلانے پر مکمل امتناع عائد ہونا چاہئے۔ دہلی۔این سی آر میں گزشتہ سال دیوالی کے دوران اور فوری بعد فضائی آلودگی کی سطحوں کا حوالہ دیتے ہوئے فاضل عدالت نے آج کہا کہ پٹاخے جلانے کے مضر اثرات کے سبب فضاء کا معیار بری طرح بگڑ رہا ہے اور شہریوں کو گھٹن کے ماحول میں سانس لینے پر مجبور ہونا پڑرہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT