Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / دہلی کی عدالت کے احاطہ میں اندھا دھند فائرنگ

دہلی کی عدالت کے احاطہ میں اندھا دھند فائرنگ

پولیس کانسٹبل ہلاک اور زیر دریافت قیدی شدید زخمی
نئی دہلی ۔ 23 ۔ ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) مشرقی دہلی کے کرکرڈوما کورٹ کے احاطہ میں آج نامعلوم حملہ آوروں کی اندھا دھند فائرنگ میں ایک کانسٹبل ہلاک اور دیگر 2 افراد شدید زخمی ہوگئے۔ اس واقعہ کے سلسلہ میں پولیس نے 4 نوجوانوں کو حراست میں لے لیا ہے ۔ پولیس نے بتایا کہ میٹرو پالیٹن مجسٹریٹ سنیل گپتا بھی اس فائرنگ میں بال بال بچ گئے۔ جب ایک گولی ان کی کرسی کے قریب سے گزرتے ہوئے دیوار سے جا ٹکرائی ، مہلوک کانسٹبل کی بحیثیت رام کمار شناخت کرلی گئی جو کہ دہلی پ ولیس کے تھرڈ بٹالین میں متعینے تھا جس کی ذمہ داری زیر دریافت قیدیوں کو جیل سے عدالت لانے اور لے جانے کی تھی ۔ اس کے جسم میں 4 گولیاں پیوست ہوگئیں۔ حکومت دہلی نے مہلوک کانسٹبل کے ورثاء کیلئے ایک لاکھ رو پئے کی امداد کا اعلان کیا ہے ۔ دیگر زخمیوں میں ایک زیر دریافت قیدی عرفان عرف شبن پہلوان جو کہ ہسٹری …… شامل ہیں جسے آج کرکرڈوما عدالت کے کورٹ نمبر 73 میں پیش کرنے کیلئے مذکورہ کانسٹبل اسکارٹ ڈیوٹی انجام دے رہا تھا ، جہاں پر آج صبح 11 بجے فائرنگ کا واقعہ پیش آیا ۔ شدید زخمی عرفان اور کانسٹبل رام کمار کو ایک خانگی ہاسپٹل میں شریک کروایا گیا

جہاں پر کانسٹبل کو مردہ قررا دیا گیا ۔ پولیس نے بتایا کہ حملہ آوروں میں بعض مشتبہ نابالغ تھے۔ 10 راؤنڈ فائرنگ کئے ۔ اس واقعہ میں علاقہ سلیمہ پورہ اور قریبی علاقوں سے 4 نوجوانوں کو حراست میں لے لیا گیا ہے  اور پوچھ تاچھ میں پتہ چلا ہے کہ عرفان کے خلاف قومی دارالحکومت کے مختلف پولیس اسٹیشنوں میں متعدد کیسس درج ہیں جس نے جنوبی دہلی میں حملہ آوروں کی ٹولی کے ایک رکن کا قتل کیا تھا ۔ پولیس کو ایک اور نوجوان کی تلاش ہے جسے فائرنگ کے واقعہ کی اپنے موبائیل فون میں فلمبندی کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا ۔ ڈی سی پی (ایسٹ) بی ایس گرجر نے بتایا کہ ایک کیس درج کر کے پولیس کی مختلف ٹیموں کو مشتبہ مقامات پر تلاشی کیلئے روانہ کردیا گیا ہے ۔ پ ولیس یہ بھی تحقیقات کر رہی ہے کہ حملہ آور کس طرح وکلاء کی سیکوریٹی کے بھیس میں ہتھیاروں کے ساتھ عدالت میں پہنچ گئے کیونکہ حملہ آور عدالت کے احاطہ میں زیر دریافت قیدی کی تاکمیں بیٹھے ہوئے تھے اور جس کے داخلے کے ساتھ ہی اندھا دھن فائرنگ کر کے فرار ہورہے تھے کہ وکلاء اور سیکوریٹی عملہ نے انہیں پکڑ کر پولیس کے حوالہ کردیا۔

TOPPOPULARRECENT