Saturday , November 25 2017
Home / Top Stories / دہلی کے امام مسجد کی بیٹی کو انگریزی میں 99 فیصد نشانات

دہلی کے امام مسجد کی بیٹی کو انگریزی میں 99 فیصد نشانات

سی بی ایس سی سیکنڈری امتحانات میں بے مثال مظاہرہ کے باوجود مالی مشکلات اعلیٰ تعلیم کی راہ میں حائل
نئی دہلی ۔ 3 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پرانی دہلی کی سدھی پورہ مسجد کے ایک مولانا عبدالمومن کی ہونہار ندا خانم نے سی بی ایس ای کے اس سال منعقدہ انگریزی زبان کے سکنڈری امتحانات میں ماضی کے تمام ریکارڈس توڑ دی ہیں، لیکن اپنی بیٹی کے اس غیرمعمولی کارنامہ پر اس کے والد خوشی کے بجائے ایک نئی پریشانی میں مبتلاء ہوگئے ہیں کہ وہ انتہائی ذہین لڑکی کو اعلیٰ تعلیم دلانے کیلئے عائد ہونے والے مصارف کیسے برداشت کرسکیں گے جبکہ امامت کیلئے دہلی وقف بورڈ سے حاصل ہونے والی اعزازی تنخواہ محض روزمرہ کے گذر بسر کیلئے بھی کافی نہیں ہوتی۔ اس حقیقت کے باوجود انہوں نے ندا کو ایل ایس آر کالج میں داخلہ دلایا ہے

جہاں وہ پولیٹیکل سائینس کی تعلیم حاصل کرے گی لیکن ہنوز وہ یہ نہیں سمجھ سکے ہیں کہ اس باوقار کالج کا تعلیمی بل کیسے ادا کر پائیں گے۔ ندا خانم نے نئی دہلی کے باوقار ماڈرن پبلک اسکول سے تعلیم حاصل کی اور 12 ویں جماعت کے سی بی ایس ای امتحانات میں انہیں مجموعی طور پر 96 ماڈرن اسکول میں اس لڑکی نے ایک اسکالر شپ پر چھٹویں جماعت سے تعلیم حاصل کی تھی۔ یہ اسکول اپنے صرف دو انتہائی ذہین طلبہ کو میرٹ فہرست کی بنیاد پر اسکالر شپ دیتا ہے اور خوش قسمتی سے ندا کو 2009 میں دو کے منجملہ ایک طالب علم کی حیثیت سے یہ اسکالرشپ حاصل ہوگئی تھی۔ تاہم قومی دارالحکومت کے انتہائی باوقار اسکولس میں شامل اس ادارہ میں ندا کو داخلہ دلانے کا کریڈٹ اس اسکول کے ایک مدرس فیروزبخت کو جاتا ہے۔ فیروز نے اپنے اسکول کے اسکالر شپ پروگرام سے فصیل بند شہر پرانا دہلی کے متعدد اردو میڈیم اسکولوں کو واقف کروایا تھا۔ ان میں شفیق میموریل اسکول بھی شامل تھا جہاں ندا بھی زیرتعلیم تھی اور اپنی محنت و ذہانت کے ذریعہ دہلی کے مختلف اسکولوں کے 400 ذہین طلبہ سے کامیاب مسابقت کرتی ہوئی اسکالر شپ اپنے نام کرلیا تھا۔ ندا نے ثابت کردیا کہ کوئی بھی خواب بڑا نہیں ہوتا اور موقع ملنے پر وہ مستقبل میں بھی اپنی بہترین صلاحیتوں کا مظاہرہ کرسکتی ہے۔  اب یہ مسلم برادری کی ذمہ داری ہیکہ وہ اس ضرورتمند ذہین لڑکی کی مالی مدد کرے جو آئی اے ایس آفیسر بننا چاہتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT