Wednesday , December 19 2018

دہلی کے انتخابات میں بی ایس پی کا ناقص مظاہرہ قومی جماعت کے موقف سے محروم ہونے کا اندیشہ

نئی دہلی۔/10فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی کے انتخابات میں بہوجن سماج پارٹی نے اگرچیکہ تمام 70نشستوں پر اپنے امیدواروں کو نامزد کیا تھا لیکن چند ایک نشستوں پر معمولی ووٹ حاصل ہوئے جس کے باعث پارٹی کا ناقص مظاہرہ سامنے آیا ہے۔ بی ایس پی نے قومی جماعت کا موقف برقرار رکھنے کی ممکنہ کوشش کی ہے لیکن بیشتر حلقوں میں اسے 1000سے بھی کم ووٹ حاصل ہ

نئی دہلی۔/10فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی کے انتخابات میں بہوجن سماج پارٹی نے اگرچیکہ تمام 70نشستوں پر اپنے امیدواروں کو نامزد کیا تھا لیکن چند ایک نشستوں پر معمولی ووٹ حاصل ہوئے جس کے باعث پارٹی کا ناقص مظاہرہ سامنے آیا ہے۔ بی ایس پی نے قومی جماعت کا موقف برقرار رکھنے کی ممکنہ کوشش کی ہے لیکن بیشتر حلقوں میں اسے 1000سے بھی کم ووٹ حاصل ہوئے اور بعض حلقوں میں برائے نام ووٹ ملے۔ پارٹی سربراہ مایاوتی کیلئے یہ خبر بدشگون ثابت ہوگی کیونکہ الیکشن کمیشن نے بی ایس پی کو وجہ نمائی نوٹس جاری کرتے ہوئے یہ جواب طلب کریگا کہ قومی جماعت کا موقف کیوں نہ واپس لے لیا جائے۔آدرش نگر حلقہ میں بی ایس پی امیدوار رام نوس نے 681ووٹ، امبیڈکر نگر میں رجبیر نے815ووٹ، بابر پور حلقہ سے محمد عبدالحق نے 754ووٹ حاصل کئے تاہم دہلی کے دیگر حلقوں گوکل پور میں سریندر کمار نے 30,080 ووٹ اور سیما پوری میں جئے شری نے 3,548 ووٹ حاصل کرکے پارٹی کے وجود کا احساس دلایا ہے۔

TOPPOPULARRECENT