Tuesday , December 12 2017
Home / ہندوستان / دہلی کے پولیس کمشنر کی برطرفی کا مطالبہ

دہلی کے پولیس کمشنر کی برطرفی کا مطالبہ

کیرالا ہاؤز میں زبردستی داخلے پر عام آدمی پار ٹی کی تنقید
نئی دہلی ۔ 28 ۔ اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) عام آدمی پارٹی نے آج دہلی پولیس کمشنر مسٹر بی ایس سی کو برطرف کردینے کا مطالبہ کیا ہے اور یہ الزام عائد کیا کہ کیرالا ہاؤز کے کینٹن میں بیف سربراہی کی شکایت کی تحقیقات کیلئے پولیس کے زبردستی داخلے پر عوام کو گمراہ کیا گیا ہے۔ پارٹی ترجمان اشوتوش نے کیرالا ہاؤز میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ غیر قانونی دھاوے کیلئے دہلی پولیس کمشنر کا پیش کردہ جواز گمراہ کن ہے ۔ جس قانون کا حوالہ دیا گیا ہے ، اس کا اطلاق نہیں ہوسکتا۔ انہوں نے کہا کہ دہلی پولیس کمشنر نے قوم اور میڈیا کو گمراہ کیا ہے ۔ لہذا انہیں اس عہدہ پر برقرار رہنے کا حق نہیں ہے ۔ وہ مستعفی ہوجائیں یا پھر برطرف کردیا جائے ۔ عام آدمی پا رٹی قائدین اشوتوش اور سومناتھ بھارتی جو کہ کیرالا یونٹ کے انچارج ہیں، راگھوا چندرا کے ساتھ آج کیرالا ہاؤز کا دورہ کیا ۔ بعد ازاں میڈیا سے مخاطب کیا۔ کیرالا ہاؤز کے کینٹن میں بیف کی سربراہی کی تصدیق میں دہلی حکومت کے رول پر ایک سوال کے جواب میں اشوتوش نے کہا کہ اگر کوئی غیر قانونی کام کئے جانے کی اطلاع ہو تو یقیناً دہلی حکومت کارروائی کرے گی۔ لیکن ہمارا یہ ایقان ہے کہ یہاں کوئی غیر قانونی کام نہیں کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ غیر قانونی گائے کے گوشت پر افواہیں پھیلانا ایک بہانہ ہے جبکہ بی جے پی حکومت اور اسکے نظریاتی حلیفوں کے گھناونے عزائم کا یہ ایک حصہ ہے ۔ عام آدمی پا رٹی اس کی سخت مذمت کرتی ہے ۔ کیرالا ہاؤز میں پولیس کے داخلے پر عوام کی برہمی کا دعویٰ کرتے ہوئے مسٹر اشوتوش نے مطالبہ کیا کہ پولیس عہدیداروں کے خلاف کارروائی کی جائے ، جنہوں نے غیر قانونی طریقہ سے حدود کی خلاف ورزی کی ہے اور اس شخص کو گرفتار کیا جائے جس نے کینٹن میں بیف سربراہ کرنے کی پولیس میں شکایت کی تھی ۔ پارٹی کے ایک اور لیڈر راگھوا چندا نے بتایا کہ دہلی کے قانون تحفظ زرعی مویشیاں میں یہ واضح کردیا گیا کہ بیف کی سربراہی کے مقام کی تلاشی اور تحقیقات کا اختیار صرف ڈائرکٹر انیمل ہسبنڈری حکومت دہلی کو حاصل ہے ۔

TOPPOPULARRECENT