Monday , August 20 2018
Home / ہندوستان / دہلی کے چیف سکریٹری پر حملہ، گورنر سے رپورٹ طلب

دہلی کے چیف سکریٹری پر حملہ، گورنر سے رپورٹ طلب

ایف آئی آر درج ، دستوری بحران ، کجریوال کے استعفیٰ کا مطالبہ : بی جے پی ، بدبختانہ : کانگریس
نئی دہلی 20 فروری (سیاست ڈاٹ کام) دہلی حکومت کے چیف سکریٹری پر گزشتہ رات ہوئے مبینہ حملے پر وزارت داخلہ نے لیفٹننٹ گورنر انیل بائیجال سے رپورٹ طلب کی ہے۔ مرکزی وزارت داخلہ نے اپنے ایک مکتوب میں لیفٹننٹ گورنر سے کہا کہ چیف منسٹر اروند کجریوال کی رہائش گاہ پر گزشتہ رات اس اعلیٰ سرکاری عہدیدار انشو پرکاش پر ہوئے مبینہ حملے کی تفصیلی رپورٹ پیش کی جائے۔ اس وزارت کے ای عہدیدار نے کہاکہ حکومت دہلی کے آئی اے ایس افسران کے ایک وفد سے وزیرداخلہ (راج ناتھ سنگھ) بھی ملاقات کریں گے۔ عہدیدار نے مزید کہاکہ وزارت داخلہ اس واقعہ سے باخبر ہے اور صورتحال پر قریبی نظر رکھی گئی ہے۔ ایک آئی اے ایس آفیسر نے آج الزام عائد کیاکہ چیف منسٹر کرجیوال کی رہائش گاہ پر ان کی عام آدمی پارٹی (عاپ) کے چند ارکان اسمبلی نے چیف سکریٹری انشو پرکاش پر حملہ کیا تھا۔ ایک سینئر آئی اے ایس عہدیدار نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی خواہش کے ساتھ کہاکہ ’’کل رات منعقدہ اجلاس نے اُنھیں (انشو پرکاش کو) زدوکوب کیا۔ چیف سکریٹری کی عینک بھی ٹوٹ گئی‘‘۔ تاہم چیف منسٹر کجریوال کے دفتر نے اس الزام کو عجیب اور بے بنیاد قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا۔ چیف منسٹر کے دفتر کے ایک سینئر عہدیدار نے کہاکہ ’’حملے کا الزام عجیب اور بے بنیاد ہے‘‘۔ ایک سینئر آئی اے ایس افسر نے کہاکہ یہ (حملہ کا) واقعہ چیف منسٹر کجریوال اور ڈپٹی چیف منسٹر منیش سیسوڈیا کی موجودگی میں پیش آیا۔ اس افسر نے کہاکہ اس واقعہ کے بعد پرکاش نے بائجال سے ملاقات کرتے ہوئے اُنھیں تفصیلات سے واقف کروایا۔ دہلی پولیس نے چیف سکریٹری دہلی انچو پرکاش کے خلاف ایک ایف آئی آر درج کرلیا ہے۔ قانون تعزیرات ہند کی متعلقہ دفعات کے تحت جس میں ضبط و تحمل کی غلطی، مجرمانہ دھمکیوں، سرکاری عہدیدار کو فرائض کے انجام دینے سے روکنا، وغیرہ کے تحت ایف آئی آر درج کرلی ہے۔ دریں اثناء بی جے پی نے آج چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال کے استعفیٰ کا مطالبہ کیا اور کہا کہ اس واقعہ کے بعد دہلی میں انارکی اور لاقانونیت پیدا ہوگئی ہے اور اس کے نتیجہ میں شہر میں دستوری بحران پیدا ہوگیا ہے۔ بی جے پی کے ترجمان سمبت پترے نے کجریوال پر الزام عائد کیا کہ وہ چن چن کر سرکاری عہدیداروں کے خلاف بدگوئی کررہے ہیں۔ اس لئے چیف منسٹر دہلی کو اپنے عہدہ سے مستعفی ہوجانا چاہئے۔ انہوں نے ادعا کیا کہ ایسی صورتحال قبل ازیں کسی بھی ریاست میں نہیں دیکھی گئی جہاں چیف سکریٹری پر برسراقتدار پارٹی کے ارکان اسمبلی نے چیف منسٹر کی ایماء پر زدوکوب کا نشانہ بنایا ہو۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ دہلی کے اعلیٰ ترین سرکاری عہدیدار کو عام آدمی پارٹی کے ارکان اسمبلی نے زدوکوب کیا ہے۔ دریں اثناء کانگریس نے آج اس واقعہ کو ’’بدبختانہ‘‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ دہلی کے چیف سکریٹری انچوپرکاش پر عام آدمی پارٹی کے ارکان اسمبلی کا مبینہ حملہ ظاہر کرتا ہیکہ یہ واقعہ مجبوراً ہوا تھا ورنہ پیش نہ آتا۔ عام آدمی پارٹی کے ارکان اسمبلی نے مبینہ طور پر کل رات چیف منسٹر اروند کجریوال کی قیامگاہ پر ریاست کے چیف سکریٹری کو حملہ کا نشانہ بنایا تھا۔ کانگریس نے اس الزام کو بے بنیاد اور گھناؤنا قرار دیا۔

TOPPOPULARRECENT