Saturday , November 18 2017
Home / ہندوستان / دہلی کے 5 ہاسپٹلس پر 700 کروڑ کا جرمانہ

دہلی کے 5 ہاسپٹلس پر 700 کروڑ کا جرمانہ

غریبوں کے مفت علاج سے انکار پر حکومت کی کارروائی
نئی دہلی 13 جون ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی حکومت نے شہر میں پانچ دواخانوں سے کہا ہے کہ وہ زائد از 700 کروڑ روپئے کے غیر واجبی منافع کو سرکاری خزانہ میں جمع کروائے ۔ ان دواخانوں نے غریب مریضوں کا مفت علاج کرنے سے انکار کردیا تھا حالانکہ انہیں اراضی فراہم کرتے ہوئے یہی اصل شرط رکھی گئی تھی۔ ان میں فورٹس اسکارٹ ہارٹ انسٹی ٹیوٹ اور میکس سوپر اسپیشالٹی ہاسپٹل بھی شامل ہیں۔ اڈیشنل ڈائرکٹر محکمہ صحت ڈاکٹر ہیم پرکاش نے کہا کہ ان پانچ دواخانوں کو رعایتی قیمتوں پر اراضیات فراہم کی گئی تھیں اور یہ شرط عائد کی گئی تھی کہ وہ غریبوں کا علاج مفت کرینگے ۔ ان دواخانںن ے ان شرائط کی تکمیل نہیں کی ہے ۔ ہم نے ڈسمبر 2015 میں نوٹس جاری کرتے ہوئے ان سے وضاحت طلب کی تھی کہ وہ کیوں غریب مریضو ں کا مفت علاج نہیں کرسکتے اور ان کے خلاف جرمانہ کیوں عائد نہیں کیا جانا چاہئے ۔ اس پر یہ دواخانہ کوئی خاطر خواہ جواب دینے میں ناکام رہے اس لئے ہم نے کارروائی کا آغاز کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ 2007 میں ہائیکورٹ کی جانب سے جاری کردہ ایک حکمنامہ کی بنیاد پر ان کے خلاف جرمانہ عائد کیا گیا ہے ۔ رقم کا بھی تمام حالات کا جائزہ لینے ہوئے تعین کیا گیا ہے ۔ دواخانوں سے کہا گیا ہے کہ وہ 9 جولائی تک رقم ادا کردیں بصورت دیگر مزید کارروائی بھی ہوسکتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT