Saturday , September 22 2018
Home / Top Stories / دین و دنیا کی کامیابی حصول علم میں مضمر : عامر علی خاں

دین و دنیا کی کامیابی حصول علم میں مضمر : عامر علی خاں

مسابقتی دور میں سخت محنت اور ڈسپلن ضروری ‘ تعلیمی ترقی مولانا آزاد کو سب سے بہتر خراج ‘ سدی پیٹ میں جلسہ سے خطاب

n تجارت اپناکر حضرت خدیجہؓ کے نقش قدم پر چلنے طالبات کو مشورہ
n آئی اے ایس ‘ آئی پی ایس بننے کی بھی جستجو کریں

حیدرآباد۔13 نومبر ( سیاست نیوز) دین و دنیا کی کامیابی و کامرانی حصول علم میں مضمر ہے ۔ طلبہ آج کے مسابقتی دور میں اپنے آپ کو کسی سے پیچھے نہ سمجھیںبلکہ سخت محنت اور ڈسپلن سے تعلیم حاصل کر کے مختلف شعبہ حیات میں اپنا نام روشن کریں ۔ ان خیالات کا اظہار آج گرلز جونیئرکالج سدی پیٹ میں منعقدہ قومی یوم تعلیم کے جلسہ کو مخاطب کرتے ہوئے نیوز ایڈیٹر ’’سیاست‘‘ جناب عامر علی خان نے کیا ۔ یہ جلسہ امام الہند مولانا ابوالکلام آزاد کی 129ویں یوم پیدائش کے ضمن میں منعقد کیا گیا تھا جس کی صدارت صدر انجمن محبان اردو سید مسکین احمد نے کی ‘ سلسلہ تقریر جاری رکھتے ہوئے جناب عامر علی خان نے طالبات کو مشورہ دیا کہ وہ اعلیٰ تعلیم حاصل کرتے ہوئے نہ صرف اپنے مدرسہ ‘ اپنے ضلع ‘ اپنی ریاست بلکہ اپنے ملک کا نام روشن کریں ۔ مسلم طالبات ڈاکٹر یا پھر انجنیئر بننے کا خواب نہ دیکھیں بلکہ آئی اے ایس ‘ آئی پی ایس بننے کی جستجو کریں تاکہ اپنے ملک کی بہتر خدمت انجام دے سکیں ۔ انہوں نے طالبات کو مشورہ دیا کہ وہ تجارت کو اپناکر حضرت خدیجۃ الکبری ؓکے نقش قدم پر چلیں ۔ انہوں نے کہا کہ جب تک طالبات سخت محنت جدوجہد اور دلچسپی سے تعلیم حاصل نہیں کریں گے ان کا کسی بھی میدان میں آگے بڑھنا مشکل ہوگا ۔ انہوں نے مولانا آزاد کی تعلیمی و سیاسی خدمات کو زبردست خراج پیش کیا اور کہا کہ طالبات مولانا آزاد کی خدمات کو پیش نظر رکھتے ہوئے اپنی زندگی کا محور بنالیں ۔ اپنے اساتذہ اور اپنے ماں باپ کا احترام کرتے ہوئے تعلیمی سفر کو درخشاں بنائیں ۔ جناب عامر علی خان نے کہا کہ مولانا ابوالکلام آزاد ایک بے باک صحافی بھی تھے وہ ملک کے پہلے وزیر تعلیم تھے ۔ مولانا آزاد کو بہتر خراج عقیدت یہی ہوگا کہ طالبات ان کے بتائے ہوئے راستے پر چلیں اور اعلیٰ تعلیم کے ذریعہ اپنا مستقبل روشن کریں ۔ سید مسکین احمد نے خطاب کرتے ہوئے مولانا آزاد کی تعلیمی ‘ سماجی ‘ سیاسی اور صحافتی خدمات پر تفصیلی روشنی ڈالی ۔ اس سلسلہ میں قبل ازیں منعقدہ تحریری و تقریری مقابلوں کے کامیاب طالبات کو نقد رقم تقسیم کئے ۔ ان مقابلوں کی نگرانی رضوانہ شہناز نے کی ۔ ان مقابلوں میں ہائی اسکول و انٹر کی تلگو و اردو کی طالبات نے حصہ لیا ۔ مولانا آزاد کی خدمات پر ان طالبات نے روشنی ڈالی ‘ان میںجناب عامر علی خا نے نقد رقم بطور انعام تقسیم کئے ۔ اس جلسہ کو ڈاکٹر مجید بیدار ‘ غوث محی الدین ‘ ستیہ نارائنا ‘ عبدالسلیم ‘ زبیر حسین ‘ غوث محی الدین نے بھی مخاطب کیا ۔شہید خان کے شکریہ پر جلسہ اختتام کو پہنچا ۔ فصیح الدین لکچرار نے جلسہ کی کارروائی چلائی ۔ ابتداء میں حبشہ بیگم کی قرات کلام پاک سے جلسہ کا آغاز ہوا ۔ جلسہ میں طالبات و اساتذہ کی کثیر تعداد موجود تھی ۔

TOPPOPULARRECENT