Monday , June 18 2018
Home / ہندوستان / دیویانی کھوبرگاڑے کیخلاف امریکہ کے تازہ مواخذہ پر ہندوستان برہم

دیویانی کھوبرگاڑے کیخلاف امریکہ کے تازہ مواخذہ پر ہندوستان برہم

نئی دہلی 15 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ میں اپنی سفیر دیویانی کھوبر گاڑے کے خلاف دوسری مرتبہ مواخذہ پر شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ہندوستان نے آج کہاکہ یہ نہایت ہی ’’غیرضروری‘‘ قدم ہے۔ اس کے سفیر کے خلاف کسی بھی قسم کا اقدام سے دونوں ملکوں کے تعلقات پر بدبختانہ منفی اثر پڑے گا۔ ہند ۔ امریکہ حکمت عملی شراکت داری کو مستحکم بنانے کے لئ

نئی دہلی 15 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ میں اپنی سفیر دیویانی کھوبر گاڑے کے خلاف دوسری مرتبہ مواخذہ پر شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ہندوستان نے آج کہاکہ یہ نہایت ہی ’’غیرضروری‘‘ قدم ہے۔ اس کے سفیر کے خلاف کسی بھی قسم کا اقدام سے دونوں ملکوں کے تعلقات پر بدبختانہ منفی اثر پڑے گا۔ ہند ۔ امریکہ حکمت عملی شراکت داری کو مستحکم بنانے کے لئے کوشاں ہیں لیکن اس طرح کی کارروائیاں ان کوششوں کو دھکہ پہونچا سکتی ہیں۔ اس بات کی وضاحت کرتے ہوئے کہ جہاں تک ہندوستان کاتعلق ہے اس کیس میں کوئی سچائی اور بنیاد نہیں ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہاکہ اب دیویانی کھوبر گاڑے امریکہ سے واپس ہوچکی ہیں۔ ہندوستان میں امریکی عدالت کا کوئی دائرہ کار نہیں ہے کہ وہ ان پر مقدمہ کی کارروائی شروع کرسکے۔ حکومت ہند بھی امریکی قانونی نظام میں اس کیس کے تعلق سے کوئی مدد نہیں کرسکتی۔

وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہاکہ ہم کو امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ آف جسٹس کے کارکرد دفتر نے دوسری مرتبہ دیویانی کھوبر گاڑے کے خلاف مواخذہ کیا ہے۔ اس حقیقت کے باوجود کہ پہلے مواخذہ اور گرفتاری وارنٹ کو اس ہفتہ کے اوائل میں ہی عدالت نے مسترد کردیا تھا۔ ڈپارٹمنٹ آف جسٹس نے تازہ مواخذہ کی کارروائی کی ہے۔ ہندوستان کا یہ شدید ردعمل دیویانی کے خلاف ویزا دھوکہ دہی الزامات پر دوبارہ مواخذہ کرنے امریکی استغاثہ کے فیصلے پر آیا ہے۔ ان پر الزام عائد کیا گیا ہے کہ اُنھوں نے اپنی گھریلو خادمہ کو ہراساں کیا اور اُجرت کم ادا کی۔ وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہاکہ یہ ایک غیر ضروری قدم ہے۔ اس طرح کی کوئی بھی کارروائی سے امریکہ میں اس فیصلے کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے اور دونوں ملکوں پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔ دونوں جانب حکمت عملی پر مبنی شراکت داری کو مستحکم بنانے پر توجہ دی جارہی ہے اور دونوں ملکوں نے باہمی تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کی سمت قدم اُٹھائے ہیں۔

اُنھوں نے یہ بھی واضح کردیا کہ جہاں تک ہندوستان کا تعلق ہے ہم نے اس سے پہلے بھی کہا تھا کہ یہ کیس بے بنیاد اور میرٹ سے عاری ہے۔ تاہم اس دوسرے مواخذہ سے ہمارے موجودہ موقف پر کوئی اثر نہیں پڑے گا کیوں کہ اب دیویانی کھوبر گاڑے ہندوستان واپس ہوچکی ہیں۔ ڈپارٹمنٹ آف جسٹس نے 21 صفحات کے مواخذہ میں جس کو امریکہ میں ہندوستانی نژاد امریکی استغاثہ پریت برارا کے دفتر کی جانب سے داخل کیا گیا ہے، کہا گیا ہے کہ اس سفیر نے دانستہ طور پر کئی ایک غلط نمائندگیاں کی اور امریکی حکام کو غلط معلومات فراہم کی جس کے ذریعہ وہ اپنے شخصی خادمہ کے لئے ویزا حاصل کیا۔ میان ہتن میں وفاقی عدالت میں تازہ مواخذہ داخل کیا گیا ہے میں یہ بھی الزامات ہیں کہ کھوبر گاڑے نے امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کو اپنی خادمہ کے لئے جو معلومات فراہم کی ہیں وہ سراسر غلط ہیں جس سے ان کی دھوکہ دہی کا علم ہوتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT