Sunday , December 17 2017
Home / کھیل کی خبریں / دیپا کو اولمپکس میں اولین ہندوستانی خاتون جمناسٹ کا اعزاز

دیپا کو اولمپکس میں اولین ہندوستانی خاتون جمناسٹ کا اعزاز

اگرتلہ کی 22 سالہ اتھلیٹ کا کوالیفائنگ ایونٹ میں اسکور 52.698 ۔ ریو گیمز میں آرٹسٹک جمناسٹکس کیلئے جگہ پکی
ریو ڈی جنیرو ، 18 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) دیپا کرماکر نے اولمپکس کیلئے کوالیفائی ہونے والی اولین ہندوستانی خاتون جمناسٹ بن کر آج نئی تاریخ رقم کی ہے جیسا کہ وہ فائنل کوالیفائنگ اور ٹسٹ ایونٹ میں ٹھوس مظاہرے کے بعد ریو گیمز کیلئے ایک مقام کے حصول میں کامیاب ہوگئیں۔ 22 سالہ اتھلیٹ نے اولمپکس کوالیفائنگ ایونٹ میں 52.698 کا مجموعی اسکور جٹاتے ہوئے اگسٹ میں یہاں منعقد شدنی ریو گیمز میں آرٹسٹک جمناسٹکس کیلئے اپنی جگہ پکی کرلی ہے۔ اس معاملے میں اولین ہندوستانی خاتون بننے کے علاوہ دیپا کو یہ اعزاز بھی مل رہا ہے کہ وہ جمناسٹکس میں چار سالہ میگا ایونٹ میں 52 سال کے طویل عرصے میں ہندوستان کی نمائندگی کررہی ہوں گی۔ ملک کی آزادی کے بعد سے 11 ہندوستانی مرد جمناسٹ اتھلیٹس نے اولمپکس میں حصہ لیا ہے (1952ء میں دو، 1956ء میں تین اور 1964ء میں چھ) لیکن اولمپکس میں کسی ہندوستانی خاتون کیلئے مسابقت کا یہ اولین موقع رہے گا۔ انٹرنیشنل فیڈریشن آف جمناسٹکس (فیڈریشن انٹرنیشنل ڈی جمناسٹک) نے دیپا کے ریو گیمز کوالیفکیشن کی اپنے سرکاری بیان میں تصدیق کردی ہے۔ عالمی ادارہ نے اپنے بیان میں کہا: ’’ریو میں جمناسٹکس ٹسٹ ایونٹ میں ویمنس کوالیفکیشن کامپٹیشن کے بعد انٹرنیشنل جمناسٹکس فیڈریشن (ایف آئی جی) یہاں ان اقوام اور انفرادی جمناسٹس کی تصدیق کرتا ہے جو ریو 2016ء اولمپک گیمز کیلئے کوالیفائی ہوئے ہیں۔‘‘ دیپا کو ریو اولمپکس کیلئے کوالیفائی کرنے والی ویمنس آرٹسٹک جمناسٹس کی فہرست میں انفرادی کوالیفائرز میں 79 ویں جمناسٹ کے طور پر جگہ دی گئی ہے۔ بھرپور توجہ کے ساتھ دیپا نے نروس ہوئے بغیر شاندار Tsukahara کی تکمیل کی جو جمناسٹکس کی سب سے زیادہ عصری والٹ ہے۔ اس کے ساتھ ہی ریو اولمپکس کیلئے کوالیفکیشن کا معاملہ دیپا کے حق میں ہوگیا۔ گزشتہ ہفتے 21 سالہ دیپا پہلی خاتون جمناسٹ اور دوسری ہندوستانی بنی تھی جس نے ہیروشیما میں منعقدہ چھٹی جمناسٹکس ایشین چمپئن شپس میں برونز میڈل جیتا۔ دیپا کا تعلق تریپورہ کے اگرتلہ سے ہے، اور وہ جمناسٹکس میں شوق سے داخل نہیں ہوئی۔ درحقیقت، یہی وہ کھیل ہے جس سے کبھی اسے نفرت ہوا کرتی تھی، جسے اختیار کرنے کی اسے اس کے والد دولال (ویٹ لفٹنگ کوچ) نے ترغیب دی۔ اسے گرپڑنے سے کافی ڈر لگتا تھا۔ تاہم گزرتے وقت کے ساتھ وہ نہ صرف اس کھیل سے مانوس ہوگئی اور اپنے اندیشوں اور اپنی ناپسند پر قابو پالیا بلکہ اس میں یہ کھیل میں بلندی تک پہنچنے کا جذبہ پروان چڑھتا گیا۔ اس کے بعد اگرتلہ میں بی ایس نندی اور کلپنا دیب ناتھ کی ٹریننگ میں دیپا نے کبھی پیچھے مڑ کر نہیں دیکھا۔ دیپا کو گزشتہ سال کامن ویلتھ گیمز (سی ڈبلیو جی) منعقدہ گلاسگو، اسکاٹ لینڈ سے شہرت ملی جہاں اُس نے برونز جیتا، جو سی ڈبلیو جی میں ہندوستان کیلئے کوئی خاتون جمناسٹ کی جانب سے اولین تمغہ ثابت ہوا۔ دیپا نے بھلے ہی گزشتہ سال کے اِنچیون، جنوبی کوریا میں منعقدہ ایشین گیمز میں نمایاں کامیابی درج نہیں کرائی، لیکن اِس مرتبہ برونز نے انھیں بلندی تک پہنچا دیا!

TOPPOPULARRECENT