Friday , June 22 2018
Home / اضلاع کی خبریں / دیہاتوں میں ترقیاتی کام مکمل ٹھپ

دیہاتوں میں ترقیاتی کام مکمل ٹھپ

مجالس مقامی انتخابات کے نظام میں تبدیلی کی مخالفت : کانگریس
میدک۔ /10جنوری، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) ریاستی حکومت کی جانب سے اس مرتبہ یعنی 2018 میں منعقدہ گرام پنچایتوں کے سرپنچوں کے انتخاب کیلئے راست طریقہ کار کو ختم تے ہوئے وارڈ ممبروں کی مدد سے یعنی بالراست انتخاب کرنے کا منصوبہ ہے۔ حکومت تلنگانہ کو چاہیئے کہ دیہاتوں میں مجالس مقامی کے انتخابات حسب سابق راست طریقہ کے انتخابی طریقہ ہی کو قطعیت دینی ہوگی۔ مسٹر پی ششی دھر ریڈی اور دیگر کانگریس قائدین نے میدک کے کانگریس دفتر راجیو بھون میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس میں حکومت کے منصوبہ پر شدید تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ بالراست سرپنچ کے انتخابی طریقہ سے دیہاتوں میں ترقیاتی کام ٹھپ ہوسکتے ہیں۔ منتخب سرپنچ گرام پنچایت میں ترقیاتی کاموں کی انجام دہی کے بجائے اپنی میعاد مکمل کرنے کیلئے وارڈ ممبروں کی خوشنودی ہی میں گزار دیں گے۔ مسٹر ششی دھر ریڈی نے سوال کیا کہ گرام پنچایتوں کے سرپنچوں کے انتخاب کو موجودہ طریقہ کار اپنایا جائے یا بالراست طریقہ کو اپنایا جائے اس کو قطعیت دینے کیلئے حکومت نے ریاستی وزراء کے تارک راما راؤ، پوچارم سرینواس ریڈی، اندرا کرن ریڈی، ایٹالہ راجندر کو شامل کرتے ہوئے ایک سب کمیٹی برائے نام تشکیل دی۔ انہوں نے کہا کہ تشکیل کردہ سب کمیٹی اپنے انتخاب کے بعد ریاست کے کسی بھی دیہات کو پہنچ کر عوام سے رائے مشورہ لیئے بغیر ہی حکومت کو اپنے فیصلہ پر مبنی رپورٹ کس طرح پیش کردی۔ مسٹر ششی دھر ریڈی نے تلنگانہ سرکار سے آخر میں درخواست کرتے ہوئے کہا کہ سرپنچوں کا انتخاب وارڈ ممبرس کے بجائے راست طور پر رائے دہندوں کے فیصلہ پر ہی کریں۔ اس موقع پر سابق زیڈ پی ٹی سی ایم انجیلو، صدر ٹاؤن کانگریس جی انجیلو گوڑ بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT