Thursday , September 20 2018
Home / اضلاع کی خبریں / دیہاتوں کی ترقی کیلئے منصوبہ بند اور مرحلہ وار اقدامات

دیہاتوں کی ترقی کیلئے منصوبہ بند اور مرحلہ وار اقدامات

گمبھی راؤ پیٹ /13 اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) کاماریڈی تا سرسلہ فور وے لائین سڑک کی تعمیر کیلئے عنقریب 90 کروڑ روپئے کی رقمی منظوری عمل میں لائی جارہی ہے ۔ ان خیالات کااظہار سیاستی وزیر پنچایت راج ، انفارمیشن ٹکنالوجی تارک راماراؤ نے گمبھی راؤ پیٹ کے موضع گورنٹال میں گورنٹال ہائی لیول بریج کے تعمیری کاموں کی سنگ بنیاد کی ایک تقریب کو م

گمبھی راؤ پیٹ /13 اپریل ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) کاماریڈی تا سرسلہ فور وے لائین سڑک کی تعمیر کیلئے عنقریب 90 کروڑ روپئے کی رقمی منظوری عمل میں لائی جارہی ہے ۔ ان خیالات کااظہار سیاستی وزیر پنچایت راج ، انفارمیشن ٹکنالوجی تارک راماراؤ نے گمبھی راؤ پیٹ کے موضع گورنٹال میں گورنٹال ہائی لیول بریج کے تعمیری کاموں کی سنگ بنیاد کی ایک تقریب کو مخاطب کرتے ہوئے کیا ۔ انہو ںنے کہا کہ دیہاتوں میں عوامی درپیش مسائل کی یکسوئی ہی تلنگانہ سرکار کا اہم مقصد ہے ۔ نوتشکیل شدہ ریاست کے قیام کے بعد بہت کم عرصہ میں مختلف ترقیاتی کاموں کو انجام دیا گیا ۔ انہوں نے اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے لگائے گئے الزامات کو بے بنیاد قرار دیا اور عوام کو کہا کہ وہ اپوزیشن کے من گھڑت الزامات پر دھیان نہ دیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس کوئی علاؤالدین چراغ نہیں ہے کہ وقت واحد تمام مسائل کا حل ہو ۔ حکومت مرحلہ وار منصوبہ بند طریقہ سے ترقیاتی کاموں کو انجام دے رہی ہے ۔ انہوں نے اپنے خطاب کو جاری رکھتے ہوئے سابقہ حکومتوں کو بڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ سابق میں کانگریس حکومت 29 لاکھ افراد کو وظائف دیا کرتی تھی لیکن اب تلنگانہ سرکار اس میں اضافہ کرتے ہوئے 37 لاکھا فراد کو مختلف اسکیمات کے ذریعہ وظائف ادا کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے سی آر بیڑی مزدور خواتین کے دور زندگی کے حالات سے اچھی طرح واقف ہیں ۔ بیڑی مزدور خواتین کو ممکنہ مدد کیلئے ریاست تلنگانہ بھر میں 3 لاکھ 75 ہزار بیڑی مزدور خواتین کو ماہانہ وظائف دینے کا نشانہ مقرر کیا ہے ۔ جن میں 2 لاکھ 50 ہزار بیڑی مزدور خواتین کو اب تک وظائف منظور کئے گئے ۔ انہوں نے پی ایف رکھنے والے بیڑی مزدوروں کی عدم منظوری پر پریشان نہ ہونے کی خواہش کی اور کہا کہ جامع خاندانی سروے کے دوران بیڑی مزدور خواتین نے فارم میں غلط اندراج کرواتے ہوئے اپنے آپ کو بیڑی مزدور کے بجائے کاشتکار ظاہر کیا تھا ۔ اس صورت میں ان بیڑی مزدور خواتین کو وظائف کی منظوری میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا تھا ۔ لیکن تمام PF رکھنے والے مزدوروں کو وظائف کی منطوری عمل میں لائی گئی ۔ سالانہ بیڑی مزدور خواتین کو دئے جانے والے وظائف کی وجہ حکومت کو سالانہ 400 کروڑ روپئے زائد بوجھ برداشت کرنا پڑے گا ۔ انہوں نے اپنے اسمبلی حلقہ سرسلہ کے مختلف حلقوں میں کئے جانے والے ترقیاتی کاموں کا ذکر کیا اور کہا کہ حلقہ سرسلہ میں جملہ 2 لاکھ 10 ہزار ووٹرس ہیں ۔ جن میں تقریباً کئی ہزار افراد کو مختلف اقسیام کے وظائف منظور کئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت تلنگانہ میں مختلف مدارس ، ہاسٹلوں میں تعلیم پانے والے غریب بچوں کو دوپہر کے کھانے میں باریک چاول فراہم کئے جارہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست تلنگانہ کے کسانوں کو معاشی بحران سے نجات دلوانے کیلئے کے سی آر نے گذشتہ سال فصلوں کو ہوئے نقصانات کا معاوضہ ادا کرنے کیلئے 480 کروڑ روپئے منظور کئے ۔ غریب طلباء کو بغیر کسی روکاوٹ کے تعلیمی سرگرمیاں جاری رکھنے کیلئے اسکالرشپ ، فیس ریمبرسمنٹ کے بقیہ جات کی ادائی کیلئے ایک ہزار آٹھ سو باسٹھ کروڑ روپئے منظور کئے ۔ اس موقع پر ریاستی وزیر تارک راما راؤ لنگانہ پیٹ تا مچرلہ ٹی روڈ کے علاوہ سی سی روڈ کمیونٹی ہال کے تعمیری کاموں کا سنگ بنیاد رکھا ۔ اس موقع پر CESS چیرمین ست نارائن گوڑ زیڈ پی ٹی سی رکن جی پدما نرساگوڑ ، زیڈ پی ٹی سی کوآپشن رکن سرور پاشاہ ، محکمہ پنچایت راج ، آر اینڈ بی کے اعلی عہدیداروں کے علاوہ پارٹی کے قائدین دیاکر راؤ ، دیویندر یادو ، محبوب علی ، ولایت ، تمہید علی ، احمد علی ، لنگم یادو ، راجہ رام ، بی شنکر ، جمشید علی ، وینکٹ سوامی ، ڈاکٹر بلراج ، پارتی ون ریڈی ، سی راجو وغیرہ موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT