Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / دیہاتوں کی مسلم آبادیوں میں تبدیلیٔ مذہب کے تشویش ناک واقعات

دیہاتوں کی مسلم آبادیوں میں تبدیلیٔ مذہب کے تشویش ناک واقعات

ویسٹ گوداوری ، کرشنا کا دورہ، مولانا وجیہ الدین قاسمی کا دورہ

ویسٹ گوداوری ، کرشنا کا دورہ، مولانا وجیہ الدین قاسمی کا دورہ

حیدرآباد 18 مئی (پریس نوٹ) مجلس تحفظ ختم نبوت ٹرسٹ آندھراپردیش کے ارکان و عہدیداران کی ہدایت پر مولانا وجیہ الدین قاسمی ناظر مجلس تحفظ ختم نبوت نے ویسٹ گوداوری اور کرشنا کے دیہاتوں کا دورہ کیا۔ دورہ سے واپسی پر اپنی رپورٹ میں اُنھوں نے بتایا کہ دیہاتوں کی مسلم آبادیوں میں تبدیلیٔ مذہب کے تشویشناک واقعات پیش آرہے ہیں۔ مسلمان اپنی جہالت، غربت، پسماندگی کی وجہ سے مذہب اسلام کو چھوڑ کر عیسائی مذہب قبول کررہے ہیں (نعوذباللہ) ۔ اُنھوں نے بتایا کہ ویسٹ گوداوری کے کویلی نامی گاؤں میں 11 مسلم گھرانے اور کھمم میں 7 مسلم خاندانوں نے عیسائی مذہب اختیار کرلیا ہے۔ اگرچہ ان دونوں مقامات پر مساجد موجود ہیں لیکن امام کا نظم نہ ہونے کی وجہ سے یہ مساجد غیر آباد ہیں اور خود ان دیہاتوں کے مسلمان امام کی عدم موجودگی کی وجہ سے دین کی بنیادی اور ضروری تعلیم سے محروم ہیں۔ واضح رہے کہ دیہاتوں میں اس طرح کی صورتحال کو ختم کرنے کے لئے مجلس تحفظ ختم نبوت کے زیرنگرانی دینی تعلیمی مکاتب چلائے جاتے ہیں۔ چنانچہ مولانا وجیہ الدین قاسمی نے ہندلور، چٹیالہ ، راوی کم پاڑ، گڈی پاڑو، کونی چرلہ، کل برائی، گوڈم، اناورم، کنڈا پروا اور کرنی پاڈو دیہاتوں میں مجلس تحفظ ختم نبوت کے قائم دینی تعلیمی مکاتب کا جائزہ بھی لیا۔ اس جائزہ میں ان مکاتب میں زیرتعلیم 60 طلباء و طالبات نے شرکت کی۔ اُنھوں نے رپورٹ کے آخر میں بتایا کہ دیہاتوں کی غیرآباد مساجد میں معقول مشاہرہ ائمہ کرام کے تقرر سے مسلم آبادیوں میں تبدیلی مذہب کے تشویش ناک واقعات کو روکا جاسکتا ہے۔ اس سلسلہ میں برادران اسلام سے بھرپور اور مخلصانہ تعاون کی اپیل کی جاتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT