Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / ذبیحہ پر امتناع سے مسلمانوں سے زیادہ ہندو پریشان

ذبیحہ پر امتناع سے مسلمانوں سے زیادہ ہندو پریشان

میگھالیہ کے دو سرے بی جے پی قائد کا استعفیٰ، پارٹی کو دھکہ
تورا (میگھالیہ)۔ 6 جون (سیاست ڈاٹ کام) میگھالیہ کے دوسرے بی جے پی قائد ضلع شمالی گارو ہلز کے صدر بی جے پی بچو مارگ نے اپنے ساتھی مغربی گارو ہلز صدر بی جے پی برنارڈ مارگ کے استعفیٰ کے بعد ذبیحہ کیلئے مویشیوں کی فروخت پر امتناع کے خلاف بطور احتجاج اپنا استعفی پیش کردیا۔ میگھالیہ میں عنقریب انتخابات مقرر ہیں اور بی جے پی اس علاقہ میں پارٹی کی توسیع کیلئے جدوجہد کررہی ہے۔ دریں اثناء قرض کے بوجھ سے دبے ہوئے کسانوں نے قرضہ جات کی ادائیگی سے قاصر رہنے کے بعد مویشیوں کی ذبیحہ کیلئے فروخت پر امتناع کو غیرقانونی قرار دینے کی وجہ سے مزید پریشان ہوگئے ہیں۔ گایوں کو مرنے کیلئے چھوڑ دیا جارہا ہے۔ کئی شمالی ہند کی ریاستوں میں آن لائن دھمکی اور سنگھ پریوار کی برہمی کی وجہ سے شمالی ہند کی کئی ریاستوں میں عوامی برہمی پھیل گئی ہے جبکہ خاص طور پر شدید مہم کے نتیجہ میں مسلمانوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے لیکن ان سے زیادہ مویشیوں کے ذبیحہ پر مکمل امتناع سے ہندو زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔ کاشت کار پہلے ہی سے خراب فصل کی وجہ سے پریشان حال تھے اور اب ذبیحہ پر امتناع نے انہیں اپنی بوڑھی اور غیرپیداواری گایوں کو عوامی مقامات پر ڈھکیل دینے پر مجبور کردیا ہے جہاں وہ پانی اور چارہ دستیاب نہ ہونے کی وجہ سے کثیر تعداد میں موت کا شکار ہورہی ہیں جنہیں خاموشی سے دفن کردیا جارہا ہے۔ انہیں کھلانے کیلئے کوئی بھی گاؤ دہشت گرد یا گائے کا پجاری آگے نہیں آرہا ہے۔حالات اتنے ابتر ہوگئے ہیں کہ شمالی ہند کی اکثر ریاستوں میں ذبیحہ گاؤ عملی اعتبار سے ختم ہوجانے کا اندیشہ ہے۔ دوسری طرف شمال مشرقی ہند کی ریاستوں میں ذبیحہ پر امتناع کے نتیجہ میں خود بی جے پی کے قائدین مستعفی ہورہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT