ذبیحہ گاؤ پر 3 افراد کیخلاف مقدمہ امتناعی قانون کی خلاف ورزی کا الزام

ممبئی ، 9 جون (سیاست ڈاٹ کام) تین اشخاص پر یہاں مدن پورہ علاقہ میں مبینہ ذبیحہ گاؤ کی پاداش میں مقدمہ دائر کیا گیا ہے، پولیس نے آج یہ بات کہی۔ مویشیوں کے بچاؤ میں کام کرنے والے جہدکار چیتن شرما کی شکایت پر دھاوا منعقد کرنے کے بعد چاند قریشی، سلطان قریشی اور حسین لنگڑا کے خلاف کل مہاراشٹرا کے تحفظ مویشیان (ترمیمی) قانون کی متعلقہ دفعات

ممبئی ، 9 جون (سیاست ڈاٹ کام) تین اشخاص پر یہاں مدن پورہ علاقہ میں مبینہ ذبیحہ گاؤ کی پاداش میں مقدمہ دائر کیا گیا ہے، پولیس نے آج یہ بات کہی۔ مویشیوں کے بچاؤ میں کام کرنے والے جہدکار چیتن شرما کی شکایت پر دھاوا منعقد کرنے کے بعد چاند قریشی، سلطان قریشی اور حسین لنگڑا کے خلاف کل مہاراشٹرا کے تحفظ مویشیان (ترمیمی) قانون کی متعلقہ دفعات کے تحت مقدمہ درج رجسٹر کرلیا گیا ہے۔ یہ قانون رواں سال مارچ میں حکومت مہاراشٹرا نے لاگو کرتے ہوئے گائے، بیل وغیرہ کے ذبیحہ پر پابندی عائد کردی ہے۔ سینئر پولیس انسپکٹر ناگپاڑہ پولیس اسٹیشن شیواجی کدم نے کہا کہ شکایت داخل کرانے کے بعد ہم نے تین ملزمین کے خلاف کیس درج رجسٹر کیا اور اس معاملہ کی تحقیقات کررہے ہیں۔ ایک خصی کردہ بیل کو بچا لیا گیا اور ملاڑ میں کارپوریشن کے زیرانتظام آسرائے مویشیان کو بھیج دیا گیا ہے۔ پولیس کو وقفے وقفے سے اطلاعات ملتی رہی ہیں کہ تمام ملزمین مدن پورہ میں گائے اور خصی کردہ بیلوں کے ذبیحہ میں ملوث ہیں۔ شرما نے کہا کہ پابندی کے باوجود بیف کی فروخت ہنوز عام ہے۔

TOPPOPULARRECENT