Sunday , February 18 2018
Home / شہر کی خبریں / رئیل اسٹیٹ تاجر فائرنگ میں ملوث حملہ آور ہنوز مفرور

رئیل اسٹیٹ تاجر فائرنگ میں ملوث حملہ آور ہنوز مفرور

اہم ملزم زبیر خان کا اسلحہ لائسنس منسوخ ‘ مجلسی کارپوریٹر سے 7گھنٹے پوچھ تاچھ
حیدرآباد /13 نومبر ( سیاست نیوز ) رئیل اسٹیٹ تاجر محمد مصطفی فائرنگ کیس میں ملوث حملہ آور ہنوز پولیس کی گرفت سے باہر ہے ۔ جبکہ ساؤتھ زون پولیس نے اس کیس کا سخت نوٹ لیتے ہوئے کیس کے اہم ملزم محمد زبیر خان کا اسلحہ لائیسنس منسوخ کردیا ۔ تحقیقاتی عہدیداروں نے زبیر اور اس کے دیگر ساتھیوں کے موبائل فون کا کال ڈاٹا حاصل کیا جس میں شاستری پورم کے مجلسی کارپوریٹرس مصباح الدین کا نمبر موجود ہونے کے نتیجہ میں انہیں سی آر پی سی کے دفعات کے تحت نوٹس جاری کرتے ہوئے پولیس اسٹیشن طلب کیا گیا ۔ مجلسی کارپوریٹر سے طویل پوچھ تاچھ کی گئی اور تفتیش کے ذریعہ مفرور زبیر کا پتہ لگانے کی کوشش کی گئی ۔مجلسی کارپوریٹرسے تحقیقاتی عہدیداروں نے 7گھنٹے تک پوچھ تاچھ کی اور زبیر کا پتہ بتانے پر اصرار کیا اور حملہ کے بعد فون کرنے کی وجہ طلب کی ۔ کارپوریٹر نے پولیس کو اپنی وضاحت میں یہ بتایا کہ وہ عوامی نمائندے ہیں اور انہیں کسی کا بھی فون کال موصول ہوسکتا ہے ۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ پولیس کی اب تک کی تحقیقات میں یہ معلوم ہوا ہے کہ مصطفی پر فائرنگ کے واقعہ میں جملہ پانچ ملزمین ملوث ہونے کا شبہ ہے اور پستول سے فائرنگ کرنے کے بعد زبیر نے مجلسی کارپوریٹر کو فی الفور فون پر ربط پیدا کیا تھا ۔ ذرائع نے مزید بتایا کہ مجلسی کارپوریٹر ورینچی ہاسپٹل بنجارہ ہلز پہونچکر وہاں کافی دیر تک وقت گذارا ۔ واضح رہے کہ محمد زبیر اور اس کے ساتھیوں نے شدید زخمی مصطفی کو ورینچی ہاسپٹل میں ایک مرسیڈیز کار میں اسے دواخانہ میں شریک کروانے کے بعد وہاں سے فرار ہوگئے تھے ۔ سائبرآباد کی اسپیشل آپریشن ٹیموں کے علاوہ مائلاردیو پلی اور راجندر نگر پولیس کی خصوصی ٹیمیں پڑوسی ریاست کرناٹک پہونچ چکی ہے اور شبہ کیا جارہا ہے کہ زبیر اور اس کے ساتھی اسی ریاست میں روپوش ہیں ۔ محمد زبیر خان جو پرانے شہر کے رئیل اسٹیٹ تاجر محمد شاہنواز خان کا بیٹا ہے نے سال 2009 میں فلک نما پولیس اسٹیشن سے اسلحہ لائیسنس حاصل کیا تھا اور اس لائیسنس پر ایک رائفلاور .32 پستول خریدی تھی ۔ شبہ کیا جارہا ہے کہ مصطفی پر کی گئی فائرنگ میں اسی لائیسنس یافتہ پستول کا استعمال کیا گیا ہے ۔ حیدرآباد پولیس کے انچارج کمشنر مسٹر وی وی سرینواس راؤ نے فلک نما پولیس کو ہدایت جاری کرتے ہوئے زبیر کا اسلحہ لائیسنس فوری منسوخ کرنے کا حکم دیا۔ دوسری طرف تحقیقات کے دوران سائبرآباد پولیس کے اعلی عہدیداروں کو اس بات پر حیرت زدہ ہوگئے جب زبیر کے کال ڈاٹا ریکارڈ میں کئی پولیس عہدیداروں کے نمبرات بھی دستیاب ہوئے جو اس سے مسلسل ربط میں رہتے تھے ۔ تحقیقات مختلف زاویوں سے جاری ہے اور پولیس کو یہ شبہ ہے کہ حالیہ دنوں پرانے شہر کے رئیل اسٹیٹ تاجرین پر ہوئے محکمہ انکم ٹیکس کے دھاؤں کیلئے مصطفی ذمہ دار ہونے کے شبہ کے تحت حملہ آوروں نے اسے نشانہ بنایا ؟ باور کیا جارہا ہے کہ زخمی محمد مصطفی جو ورینچی ہاسپٹل میں زیر علاج ہے کی حالت مستحکم بتائی جاتی ہے لیکن پولیس اب تک اس کا بیان قلمبند نہیں کرسکی ۔ اس فائرنگ کے واقعہکے پیش نظر ریاست کے نئے ڈائرکٹر جنرل آف پولیس مسٹر مہیندر ریڈی نے سٹی پولیس عہدیداروں کا آج ایک اجلاس منعقد کیا جس میں یہ واضح طور پر ہدایت دی ہے کہ شہر میں فائرنگ کے واقعہ میں ملوث اسلحہ لائیسنس کو فوری منسوخ کردیا جائے ۔ واضح رہے کہ سالگرہ تقریب، شادی بارات کے موقع پر شاہ علی بنڈہ میں کھلے عام فائرنگ اور اسی قسم کے واقعات میں ملوث افراد کے اسلحہ لائیسنس بھی منسوخ کردئے جائیں گے ۔

 

TOPPOPULARRECENT