Saturday , December 16 2017
Home / کھیل کی خبریں / رائنا کی سنچری ، انڈیا اے نے سیریز جیت لی

رائنا کی سنچری ، انڈیا اے نے سیریز جیت لی

Bengaluru : India 'A' player Suresh Raina in action during the 3rd unofficial ODI against Bangladesh at Chinnaswamy Stadium in Bengaluru on Sunday. PTI Photo by Shailendra Bhojak(PTI9_20_2015_000161B)

بنگلہ دیش اے کیخلاف بارش سے متاثرہ میچ میں 75 رنز سے کامیابی
بنگلورو۔ 20 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) سینئر بیٹسمین سریش رائنا کی شاندار سنچری کی بدولت انڈیا اے نے آج بنگلہ دیش اے کو 75 رنوں سے ہرادیا۔ تیسرے غیرسرکاری بارش سے متاثرہ اس میچ میں انڈیا اے کو ڈک ورتھ ؍ لیوس طریقہ کار کے مطابق کامیاب قرار دیا گیا اور اس نے سیریز 2-1 سے جیت لی۔ اُنمکت چند کی زیرقیادت انڈیا اے نے پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور سریش رائنا کے 104 رنز کی شاندار سنچری کی بدولت مقررہ 50 اوورس میں 6 وکٹس کے نقصان سے 297 رنز بنائے۔ اس کے بعد بولرس نے مہمان ٹیم کو 32 اوورس میں 141/6 پر محدود کردیا جبکہ دوسرے اور قطعی وقت کا کھیل بارش کی وجہ سے روک دیا گیا۔ پہلے بارش کی خلل اندازی کی وجہ سے کامیابی کیلئے تعاقب کے نشانے پر نظرثانی کی گئی اور اسے 46 اوورس میں 290 رنز کیا گیا لیکن دوسرے اور آخری مرتبہ پھر بارش نے کھیل پر اثر ڈالا اور مقررہ نشانہ پر نظرثانی کرتے ہوئے اسے 32 اوورس میں 217 رنز کیا گیا۔ کرناٹک کے بائیں بازو کے بولر سریناتھ اروند نے آج دو اہم وکٹس حاصل کرتے ہوئے انڈیا کی سینئر ٹیم میں واپسی کی خوشی منائی، لیکن آج کے اس میچ میں بیٹنگ کے شعبہ میں بہتر مظاہرہ کے سبب انڈیا اے کو کامیابی ملی۔ انمکت چند (41) نے وکٹ کیپر بیٹسمین سنجیو سیامسن (90) کے ساتھ دوسری وکٹ کی رفاقت میں 82 رنز جوڑے۔ اس طرح ٹیم کو ایک مضبوط بنیاد فراہم ہوئی، حالانکہ میانک اگروال (4) پر آؤٹ ہوگئے تھے۔ سریش رائنا نے جو جنوبی افریقہ سیریز کی تیاری کررہے ہیں، پہلے اور دوسرے میچ میں بالترتیب 16 اور 17 رنز بنانے کی وجہ سے کافی دباؤ میں تھے تاہم انہوں نے آج شاندار اننگز کھیلی اور 94 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے 9 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 104 رنز بنائے۔ بائیں ہاتھ کے بیٹسمین نے سیامسن کے ساتھ تیسری وکٹ کی رفاقت میں 116 رنز جوڑے۔رائنا کی یہ چھٹی سنچری تھی۔ انڈیا اے ٹیم کو درمیان میں کسی قدر مشکل صورتحال درپیش تھی لیکن نمبر 7 بیٹسمین رشی دھون نے 51 گیندوں میں 26 رنز کے ذریعہ 26 رنز بناتے ہوئے ایک بڑا اسکور کھڑا کرنے میں مدد کی۔ جواب میں مومن الحق کی زیرقیادت ٹیم ابتداء ہی سے لڑکھڑا گئی اور وقفہ وقفہ سے اس کے وکٹس گرتے رہے۔ مڈل آرڈر نے صورتحال کو سنبھالنے کی کسی قدر کوشش کی لیکن ایک بڑا اسکور کھڑا کرنے یا بہتر انداز میں تعاقب میں ناکامی ہوئی۔ شبیر رحمن نے سب سے زیادہ 41 ناٹ آؤٹ رنز بنائے۔ اروند نے 14 رنز کے عوض 2 وکٹس لئے۔ انہوں نے رونی تعلقدار (9) اور انعم الحق (1) کو آؤٹ کیا۔ اس کے علاوہ کلدیپ یادو نے بھی 29 رنز کے عوض 2 وکٹس لئے۔

TOPPOPULARRECENT