رائیکل میں ڈگری کالج اور مینگو مارکٹ کے قیام کا تیقن

جگتیال /18 مئی ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) تلنگانہ راشٹرا سمیتی کا پہلا ایک سالہ دور اقتدار کامیاب ،حکومت انتخابات سے قبل کئے گئے وعدوں کی تکمیل میں ایک قدم آگے رہی ۔ حلقہ جگتیال کی ترقی کیلئے ریاستی حکومت کی جانب سے مختلف اسکیمات کی عمل آوری کیلئے 471 کروڑ فنڈس فراہمی کئے گئے ۔ ان خیالات کا اظہار رکن پارلیمنٹ شریمتی کے کویتا نے کہا کہ تلنگان

جگتیال /18 مئی ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز ) تلنگانہ راشٹرا سمیتی کا پہلا ایک سالہ دور اقتدار کامیاب ،حکومت انتخابات سے قبل کئے گئے وعدوں کی تکمیل میں ایک قدم آگے رہی ۔ حلقہ جگتیال کی ترقی کیلئے ریاستی حکومت کی جانب سے مختلف اسکیمات کی عمل آوری کیلئے 471 کروڑ فنڈس فراہمی کئے گئے ۔ ان خیالات کا اظہار رکن پارلیمنٹ شریمتی کے کویتا نے کہا کہ تلنگانہ راشٹرا سمیتی کے پہلے ایک سالہ دور اقتدار کی تکمیل پر جگتیال پارٹی آفس میں صحافیوں سے بات چیت کریت ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے حلقہ جگیتال کی نشست پر ڈاکٹر ایم سنجئے کمار کی بہت ہی کم اکثریت سے ناکامی ہوئی ہے ۔ آنے والے انتخابات میں ڈاکٹر سنجئے کمار کی آواز اسمبلی میں اٹھے گی ۔ جگتیال حلقہ کو خصوصی ترقی کیلئے ہر ممکنہ اقدامات کئے جائیں گے ۔ ریساتی حکومت نے 471 کروڑ فنڈس حلقہ جگتیال میں مختلف ترقیاتی و فلاحی اسکیمات کیلئے جاری کئے ہیں ۔ جس میں اہم کام رائیکل منڈل میں 70 کروڑ کی لاگت سے بورناپلی میں بریج کی تعمیر اور مارکٹ یارڈ کو علحدہ کیا گیا اور مزید دو اہم کام باقی ہیں ۔ رائیکل میں آم کی زیادہ پیدوار ہے وہاں پر مینگو مارکٹ کا قیام اور گرلز ڈگری کالج کے قیام کے علاوہ رائیکل میں موجود گوڈی توتا منڈل کو ٹورازم ریاستی سطح کا صیاحتی مقام بنانے کیلئے مرکز سے نمائندگی کی کوشش کی جارہی ہے ۔ اس کے علاوہ حلقہ جگتیال میں واقع جے این ٹی یو کالج اور اگریکلچر کالج کی ترقی کیلئے اقدامات کئے جئیں گے ۔ اسپورٹس کی ترقی کیلئے 6 کروڑ کی لاگت سے اسٹیڈیم کی تعمیر کیلئے مرکزی اسپورٹس اتھاریٹی سے نمائندگی کی گئی ۔ حلقہ جگتیال کی خستہ حالی کا ذمہ دار کون ہے ۔ اسے عوام اچھی طرح جانتی ہے ۔ 68 سالہ آزادی کے بعد سے 50 سال کانگریس اور بندرہ سال تلگودیشم اقتدار پر تھی ۔ انہوں نے کہا کہ پینے کے پانی کے مسئلہ کو بہت جلد حل کرلیا جائے گا ۔ ریاستی حکومت نے 400 کروڑ روپئے واٹر گرڈس کیلئے منظور کی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ اپنے ایم پی فنڈس سے 30 لاکھ روپئے واٹر ٹینکرس کیلئے دئے گئے ۔ حکومت نے فصل نقصان کے تحت 83 کروڑ 23 لاکھ روپئے کسانوں کو ادا کی ہے جو کہ کانگریس دور اقتدار کے تین سال دور اقتدار میں کسانوں کو ادا نہیں کئے گئے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ میری ذمہ دارہے اور بہت جلد فراہمی کا تیقن دیا ۔ صحافیوں کو ایک سوسائٹی بنانے کی خواہش کی ۔ اس موقع پر جگتیال ترکاری فروش اسوسی ایشن سے تعلق رکھنے والے مرد و خواتین بڑی تعداد میں آفس پہونچ کر ان کے ساتھ ا نصاف کرنے کا مطالبہ کیا ۔ مارکٹ میں بلدیہ کی جانب سے تعمیری کام کے بہانے سبھی کو خالی کروانے کی کوشش کا الزام لگایا ۔ جس پر انہوں نے عہدیداران سے بات کرتے ہوئے انصاف دلانے کی بات کہی ۔ اس موقع پر موراپلی سرپنچ نے ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کی ۔ اس موقع پر ڈاکٹر سنجیو کمار ، حلقہ انچارج ٹی آر ایس دیویندر نائیک کونسلر اور محمد افضل بیگ صابر ، محمد امین الحسن ، محمد عبدالقادر ، صدر میناریٹی سیل اور دیگر موجود تھے ۔

TOPPOPULARRECENT